آئینہ کے رکن بنیں ؞؞؞؞؞؞؞ اپنی تخلیقات ہمیں ارسال کریں ؞؞؞؞؞s؞؞s؞؞ ٓآئینہ میں اشتہارات دینے کے لئے رابطہ کریں ؞؞؞؞؞؞؞؞؞ اس بلاگ میں شامل مشمولات کے حوالہ سے شائع کی جاسکتی ہیں۔

Saturday, 1 March 2014

آج کا شعر

لکھ کر جو میرا نام زمیں پر مٹا دیا
ان کا تھا کھیل خاک میں ہم کو ملا دیا

likh kar jo mera naam zamin par  mita diya
unka tha khel khak mein hum ko  mila diya

लिख कर जो मेरा नाम ज़मीं पर मिटा दिया
उन का था खेल ख़ाक में हम को मिला दिया

0 comments:

Post a comment

خوش خبری