آئینہ کے رکن بنیں ؞؞؞؞؞؞؞ اپنی تخلیقات ہمیں ارسال کریں ؞؞؞؞؞s؞؞s؞؞ ٓآئینہ میں اشتہارات دینے کے لئے رابطہ کریں ؞؞؞؞؞؞؞؞؞ اس بلاگ میں شامل مشمولات کے حوالہ سے شائع کی جاسکتی ہیں۔

Sunday, 12 August 2018

Sunflower

سورج مکھی ( Sunflower)
سورج مکھی پیلے رنگ کا  ایک خوش نما پھول ہے   جس کا درمیانی حصہ بھورا ہوتا ہے اورجو ایک سیدھی ڈالی میں کھلتا ہے۔ اس کا نام سورج مکھی اس لیے پڑا کہ اس کا رخ سورج  کی جانب مڑتا رہتا ہے۔ صبح اس کا    رخ مشرق کی جانب رہتا ہے تو شام میں اس کا رخ مغرب کی جانب ہو تا ہے۔ اس کی بیج سے تیل نکالا جاتا ہے جس کا استعمال کھانا بنانے میں ہوتا ہے
سورج مکھی کے پھولوں کی تقریباً 60 قسمیں ہوتی ہیں جو شمالی امریکہ اور دنیا بھر میں پائی جاتی ہیں۔بھارت میں بھی سورج مکھی بڑی تعداد میں پائے جاتے ہیں ۔ سورج مکھی  روس اور یوکرین کا قومی پھول ہے جبکہ  کنساس میں اسے ریاستی پھول کا درجہ حاصل ہے۔بھارت میں ریاست کرناٹک سورج مکھی پیدا کرنے والوں میں سر فہرست ہے۔
سورج مکھی کے پھولوں کا استعمال کھانے ،تیل اور رنگوں میں ہوتا ہے۔
سورج مکھی کا پودا 3 سے 18 فٹ تک کی اونچائی کا ہوتا ہے۔ یہ ایک نہایت تیزی سے بڑھنے والا پھول ہے اور 6 ماہ میں یہ 8 سے 12 فٹ کا ہوجاتا ہے۔ بھارت میں اس کی اوسط اونچائی 3 سے 16 فٹ ہوتی ہے۔اب اس کی بہت ساری قسمیں آگئی ہیں اور اب اسے گملوں میں بھی اگایا جانے لگا ہے۔
سورج مکھی اگانے کے لیے وہ جگہ بہترین ہے جہاں 6 سے 8 گھنٹے تک دھوپ آتی ہے۔ سورج مکھی کو لگانا اور اس کی دیکھ بھال کرنا آسان ہے۔ اس کے بیج کو  دو سے تین فٹ کےدائرے میں دو فٹ گہرے گڈھے کے اندر بونا مناسب ہے۔
سورج مکھی کےسر یعنی درمیانی حصے میں تقریباً دو ہزار چھوٹے چھوٹے منقش پھول ہوتے ہیں جو  زیرگی  یعنی پولی نیشن  (پھول دار پودوں میں پولن کا نر تولیدی عضو سے مادہ تولیدی عضو میں منتقل ہونے کا عمل ) کے بعد بیج میں تبدیل ہوجاتے ہیں۔سر کے کنارے کے حصے میں پنکھڑیاں ہوتی ہیں جو بیج میں تبدیل نہیں ہوتیں۔ یہ عام طور سے  پیلی،نارنجی اور لال ہوتی ہیں۔
سورج مکھی کے پھول بوئے جانے کے 80 سے 100 دن بعد سن بلوغ کو پہنچتے ہیں۔
سورج مکھی کے بیج دو طرح کے ہوتے ہیں: سیاہ اور دھاری دار۔ یہ سائز، رنگ اورتغذیہ میں مختلف ہوتے ہیں۔
قبائلی امریکیوں کے لیے یہ غذا کا ایک اہم ذریعہ ہے۔ وہ اس کا روٹی بنانے میں استعمال کرتے ہیں۔ وہ روحانی تقریبوں میں سورج مکھی کے پیلے رنگ سے اپنے جسموں کو پینٹ کرتے ہیں۔وہ اس کا استعمال طبّی مقاصد سے بھی کرتے ہیں۔
سورج مکھی کے بیج وٹامن بی اور وٹامن ای  اور معدنیات مثلاً تانبا، فاسفورس، سیلینیم اور میگنیشیم کے حصول کا اہم ذریعہ ہیں۔
سورج مکھی کے سیاہ بیج تیل حاصل کرنے کا بہترین ذریعہ ہیں  جن کا استعال کھانابنانے میں ہوتا ہے۔
دھاری دار بیج نمکین کے طور پر استعمال ہوتے ہیں۔ اس کا استعمال سلاد میں بھی ہوتا ہے۔ اس سے دیگر نمکین ڈشیں بھی بنائی جاتی ہیں اور اسے مہمانوں کو بطور ناشتہ پیش کیا جاتا ہے۔
تازہ ترین تحقیقات کےمطابق اس کے بیج کا استعمال بایو ڈیزل بنانے میں کیا جاتا ہے جو ماحول دوست ہوتا ہے اور فضا میں آلودگی کم کرنے میں معاون ہوتا ہے۔
سورج مکھی کے بیج چڑیوں، گوریّوں اور کیڑے مکوڑوں کی پسندیدہ غذا ہے۔
سورج مکھی بھاری معدنیات اور ٹوکسنس کو زمین سے جذب کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے اور اسے آلودہ ماحول میں خاص طور سے لگایا جاتا ہے۔اس کے اندر نیوکلیائی آلودگی کو بھی کم کرنے کی صلاحیت ہوتی ہے۔
یہ ایک سالانہ پیدا ہونے والا پھول ہے لیکن اس کی بعض قسمیں ایسی ہیں جو دو سال تک بھی رہتی ہیں۔

0 comments:

Post a comment

خوش خبری