آئینہ کے رکن بنیں ؞؞؞؞؞؞؞ اپنی تخلیقات ہمیں ارسال کریں ؞؞؞؞؞s؞؞s؞؞ ٓآئینہ میں اشتہارات دینے کے لئے رابطہ کریں ؞؞؞؞؞؞؞؞؞ اس بلاگ میں شامل مشمولات کے حوالہ سے شائع کی جاسکتی ہیں۔

Sunday, 2 September 2018

Phool Walon Ki Sair - NCERT Solutions Class VII Urdu

پھول والوں کی سیر
سوچیے اوربتائیے 
سوال: ہندوستان کے مذہبی تہوار کون کون سے ہیں؟
جواب: ہندوستان کے مذہبی تہوار عید،کرسمس،دیوالی،گروپرب ہیں۔ اس کے غلاوہ اور بھی تہوار ہیں جو ملک کے الگ الگ حصّوں میں منائے جانتے ہیں

سوال: پھول والوں کی سیر کی کیا خاصیت ہے؟
جواب: پھول والوں کی سیر کی خاصیت یہ ہے کہ اس میں ہندو مسلم بھائی چارے کے ساتھ پھولوں کا پنکھامہرولی میں جوگ مایا کے مندر اور خواجہ بختیار کاکی کے مزار پر چڑھانے کے لیے لے کر جاتے ہیں۔

سوال: انگریز ہندوستان میں کیوں آئے؟
جواب: انگریز ہمارے ملک میں تجارت کی غرض سے آئے تھے لیکن یہاں آکر انہوں نے لوگوں میں پھوٹ ڈالی اور بہت سے علاقوں میں قابض ہو گئے۔اور تجارت کے ساتھ ساتھ حکومت کو اپنا مقصد بنا لیا۔

سوال: پرانے زمانے میں کون کون سی سواریاں استعمال ہوتی تھیں؟
جواب: پرانے زمانے میں رتھ،بیل گاڑی،گھوڑے اور پالکیاں استعمال ہوتی تھی۔ 

سوال: میلے کے اہتمام میں بادشاہ کیا کرتے تھے؟
جواب: میلے کے اہتمام میں بادشاہ کُشتیاں دیکھتے تھے اور مرغے اور تیتر لڑاتے تھے۔گھوڑوں اور اونٹوں کی دوڑ بھی ہوتی تھی۔ 

سوال: جوگ مایا کا مندر اور خواجہ بختیار کاکیؒ کی درگاہ کہاں واقع ہے؟
جواب:  جوگ مایا کا مندر اور خواجہ بختیار کاکیؒ کی درگاہ دہلی کے مہرولی میں واقع ہے۔

سوال: آخری مغل بادشاہ کا نام کیا تھا ؟
جواب:  آخری مغل بادشاہ کا نام مرزا جہانگیر تھا۔

سوال: آزادی کہ بعد پھول والوں کی سیرکس نے شروع کرائی؟
جواب: آزادی کہ بعد پھول والوں کی سیر ملک کے پہلے وزیر اعظم پنڈت جواہر لال نہرو نے شروع کروائی تھی۔ 

سوال: پھول والوں کی سیر کا میلہ ہمارے لیے کیوں اہم ہے؟
جواب: پھول والوں کی سیر کا میلہ ہمیں آپسی بھائی چارہ کا سبق سکھاتا ہے۔ اس میلہ میں ہندو ، مسلم، سکھ، عیسائی  سبھی شریک ہوتے ہیں اور آپسی بھائی چارے اور عقیدت کا مظاہرہ کرتے ہیں۔ یہ میلہ دہلی میں آپسی بھائی چارے کی ایک خاص تہذیب کی نمائندگی کرتا ہے۔۔

خالی جگہ کو صحیح لفظ سے بھریے
پھول والوں کی سیرسبھی مذہب کے لوگ مناتے ہیں۔
انگریزوں نے شہزادے کو قید کردیا۔
خواجہ بختیار کاکیؒ کا مزار مہرولی میں ہے۔
بیل گاڑی پر بیٹھ کر لوگ مہرولی جاتے تھے۔
پھول والوں کی سیر بھادو کے موسم میں ہوتا تھا۔
پھول والوں کی سیر مہینے کی چودھویں رات کو منایا جاتا تھا۔
پہلے دن پھولوں کا پنکھا جوگ مایا کے مندر پر چڑھایا جاتا تھا۔
دوسرے دن پھولوں کا پنکھا خواجہ بختیار کاکیؒ کی درگاہ پر چڑھایا جاتا تھا۔

نیچے لکھے ہوئےلفظوں کو اپنے جملوں میں استعمال کیجیے۔
جوش وخروش : ہندوستان میں سبھی تیوہار جوش و خروش سے منائے جاتے ہیں۔
دخل : دوسروں کے کام میں دخل نہ دیں۔ 
قید  :  اورنگ زیب نے شاہ جہاں کو قید میں ڈال دیا۔ 
دارالسلطنت  : دہلی ہندوستان کا دارالسلطنت ہے۔ 
فروغ  :  ہمیں اردو زبان کا فروغ کرنا چاہیے۔
آپسی بھائی چارے کو فروغ دیا جانا چاہیے۔
احترام  : ہمیں اپنے بڑوں کا احترام کرنا چاہیے۔ 
غول  : شیر نے ہرنوں کے غول پر حملہ کردیا۔ 
پرساد  : مندروں میں پرساد بٹ رہے تھے۔ 

واحد سے جمع اور جمع سے واحد بنائیے۔
مذاہب : مذہب
علاقہ : علاقوں
انگریزوں : انگریز
گاڑی : گاڑیاں
پنکھوں : پنکھا
پالکی : پالکیاں
حویلی : حویلیاں
کڑھائی : کڑھائیاں

ان لفظوں کے متضاد لکھیے
بادشاہ : فقیر
قید : آزاد
برباد : آباد
رونق : بے رونق
پسند : ناپسند


دیگر اسباق کے لیے کلک کریں

0 comments:

Post a comment

خوش خبری