آئینہ کے رکن بنیں ؞؞؞؞؞؞؞ اپنی تخلیقات ہمیں ارسال کریں ؞؞؞؞؞s؞؞s؞؞ ٓآئینہ میں اشتہارات دینے کے لئے رابطہ کریں ؞؞؞؞؞؞؞؞؞ اس بلاگ میں شامل مشمولات کے حوالہ سے شائع کی جاسکتی ہیں۔

Wednesday, February 13, 2019

Barish Ka Pehla Qatra - NCERT Solutions Class VI Urdu

بارش کا پہلا قطرہ


سوچیے اور بتائیے

1. ہر قطرے نے اپنے کو ناچیز اور غریب کیوں کہا ہے؟
جواب: قطروں نے اپنے کو ناچیز اور غریب اس لیے کہا کہ انہیں لگتا ہے کہ تنہا ان کی کوئی بساط نہیں اور وہ گرم زمین پر گر کر ختم ہو جائیں گے۔

2. دلاور قطرے نے کیا کہا؟
جواب: دلاور قطرے نے کہا کہ آؤ میرے پیچھے قدم بڑھاؤ اور پورے میدان کو سیراب کردو۔

3. شاعر نے سخی کس کو کہا ہے؟
جواب: شاعر نے سخی  پانی کے قطرے  دلاور کو کہا ہے۔

4. سخی کی جرأت دیکھ کر دوسرے قطروں نے کیا کیا؟
جواب: سخی کی جرأت دیکھ کر سبھی قطرے اس کے پیچھے چل پڑے یہاں تک کہ قطروں کا تار بن گیا اور موسلا دھار بارش ہونے لگی۔

5. شاعر اس نظم میں کیا پیغام دینا چاہتا ہے؟
جواب: شاعر قوم کو یہ پیغام دینا چاہتا ہے کہ قو کم سے پانی کے قطروں کی طرح اتفاق کرلے اور ایک سیل رواں بن جائے۔
وہ بتانا چاہتا ہے کہ اتفاق میں بڑی طاقت ہے جس طرح کمزور پانی کا قطرہ سیلاب لا سکتا ہے تم بھی زمانے کی تقدیر بدل سکتے ہو۔

نیچے دیے ہوئے لفظوں کو جملوں میں استعمال کیجیے

قطرہ: بارش کا پہلا قطرہ زمین پر گرا۔

خطرہ: زمین پر خطرہ تھا۔

دلاور: قطرہ بڑا دلاور تھا۔

شناور: وہ بہت بڑا شناور تھا۔

جانفشانی:اس نے جانفشانی سے محنت کی۔

جرأت: قطروں نے جرأت کا مظاہرہ کیا۔

سخی: نیک آدمی بہت سخی تھا۔

پیروی: سبھی قطروں نے دلاور کی پیروی کی۔

قوم: قوم کو قطرے سے سبق سیکھنا چاہیے۔

مصرعوں کو مکمل کیجیے

1. ناچیز ہوں میں غریب قطرہ

2. مٹی، پتھر تمام ہیں گرم

3. ایک قطرہ کہ تھا بڑا دلاور

4. میرے پیچھے قدم بڑھاؤ

5. قطرہ قطرہ زمیں پہ ٹپکا

6. اے صاحبو قوم کی خبر لو

ان لفظوں کے متضاد لکھیے


گرم
ٹھنڈا
سخی
۔کنجوس
زمین
۔آسمان
اتفاق
بے اتفاق

واحد سے جمع اور جمع سے واحد لکھیے




قطرہ
قطروں
خطرہ
۔خطرات
پتھروں
۔پتھر
اقدام
قدم
قوم
اقوام
خبریں
خبر







ترتیب

0 comments:

Post a Comment

خوش خبری