آئینہ کے رکن بنیں ؞؞؞؞؞؞؞ اپنی تخلیقات ہمیں ارسال کریں ؞؞؞؞؞s؞؞s؞؞ ٓآئینہ میں اشتہارات دینے کے لئے رابطہ کریں ؞؞؞؞؞؞؞؞؞ اس بلاگ میں شامل مشمولات کے حوالہ سے شائع کی جاسکتی ہیں۔

Wednesday, 19 March 2014

آج کا شعر

ان کے بھیگے ہوئے بالوں میں ہے جو عالم کیف
کچھ وہی کیف مرے دیدہ ٔنمناک میں ہے

unke bhige hue balon mein h jo aalam e kaif
kuch wahi kaif mere deeda e namnahk mein hae

उन के भीगे बालों में है जो आलम ए कैफ 
कुछ वही कैफ मेरे दीदा ए नमनाक में है 

جذبی

0 comments:

Post a comment

خوش خبری