آئینہ کے رکن بنیں ؞؞؞؞؞؞؞ اپنی تخلیقات ہمیں ارسال کریں ؞؞؞؞؞s؞؞s؞؞ ٓآئینہ میں اشتہارات دینے کے لئے رابطہ کریں ؞؞؞؞؞؞؞؞؞ اس بلاگ میں شامل مشمولات کے حوالہ سے شائع کی جاسکتی ہیں۔

Wednesday, 13 February 2019

Pahle Kaam, Baad Aaraam - NCERT Solutions Class VI Urdu

پہلے کام، بعد آرام
تلوک چند محروم
کام کے وقت جو آرام کیا کرتے ہیں
 آخر کار وہ ناکام رہا کرتے ہیں

 سخت نادان ہیں وہ لوگ برا کرتے ہیں
 ہم تو داناؤں سے یہ قول سنا کرتے ہیں

پہلے تم کام کرو بعد میں آرام کرو

 لطف آرام میں ملتا ہے بہت کام کے بعد
 کام کرنے میں مزہ آتا ہے آرام کے بعد 

دن کو جو سویا تو کیا سوئے گا وہ شام کے بعد 
دور راحت کا مزہ تلخئی ایام کے بعد

پہلے تم کام کرو بعد میں آرام کرو 

جس کو آرام سے ہر وقت سروکار رہے
 فکر آرام میں جو کام سے بیزار رہے 

کیا تعجب ہے کہ وہ مفلس و نادار رہنے 
کاہل وخستہ و در مانده و لاچار رہے

پہلے تم کام کرو بعد میں آرام کرو

 چھوڑتے کام ادھورا نہیں ہمت والے 
کام پورا نہیں کرتےکبھی راحت والے

 بازی لے جاتے ہیں جو لوگ ہیں محنت والے
 ہار جاتے ہیں سدا سستی و غفلت والے

پہلے تم کام کرو بعد میں آرام کرو

سوچیے اور بتائیے
1. وقت پر کام نہ کرنے کا کیا نتیجہ ہوتا ہے؟
جواب: وقت پر جو لوگ کام نہیں کرتے ہیں وہ اپنی زندگی میں ناکام رہا کرتے ہیں۔

2. کامیابی حاصل کرنے کے لیے کس قول پر عمل کرنا چاہیے؟
جواب: کامیابی حاصل کرنے کے لیے ہمیں پہلے کام بعد میں آرام کے قول پر عمل کرنا چاہیے۔ آج کا کام کل پر نہ ٹال بھی ایک مشہور قول ہے۔

3. آرام میں لطف کب حاصل ہوتا ہے؟
جواب: آرام میں لطف اسی وقت حاصل ہوتا ہے جب آدمی اپنے کام مکمل کر لیتا ہے۔

4. شاعر نے آرام کرنے والوں کے لیے کون کون سے الفاظ استعمال کیے ہیں؟
جواب: شاعر نے آرام کرنے والوں کے لیے کاہل، خستہ، درماندہ اور لاچار کے الفاظ استعمال کیے ہیں۔

5. اس نظم میں محنت سے کام کرنے والوں کی کیا کیا خوبیاں بیان کی گئی ہے؟
جواب: ہمت کرنے والےکبھی اپنا کام ادھورا نہیں چھوڑتے۔محنت والے ہمیشہ بازی لے جاتے ہیں۔

6. سستی اور غفلت سے کام کرنے والوں ا کیا انجام ہوتا ہے؟
جواب:سستی اور غفلت کرنے والے ہمیشہ ہار جاتے ہیں۔

7. پہلے کام بعد میں آرام کی تکرار سے شاعر کا کیا مطلب ہے۔
جواب: پہلے کام بعد میں تکرار سے شاعر کا یہ کہنا ہے کہ وہی لوگ کامیاب ہوتے ہیں جو وقت پر اپنا کام کرتے ہیں۔

نیچے دیے ہوئے لفظوں کو جملوں میں استعمال کیجیے۔
بیزار ہونا : وہ اپنی کتاب سے بیزار ہو گیا۔
بازی لے جانا :  امتحان میں  صبا دوسروں پر بازی لے گئی۔
ہار جانا : کبڈی میں میری کلاس ہار گئی۔
نادان : نادان دوست سے دانا دشمن بہتر ہے۔
غفلت :
مسافر غفلت کا شکار ہوگئے۔

دیگر اسباق کے لیے کلک کریں

0 comments:

Post a Comment

خوش خبری