آئینہ کے رکن بنیں ؞؞؞؞؞؞؞ اپنی تخلیقات ہمیں ارسال کریں ؞؞؞؞؞s؞؞s؞؞ ٓآئینہ میں اشتہارات دینے کے لئے رابطہ کریں ؞؞؞؞؞؞؞؞؞ اس بلاگ میں شامل مشمولات کے حوالہ سے شائع کی جاسکتی ہیں۔

Sunday, October 21, 2018

Khwaja Qutubuddin Bakhtiyar Kaki (R) - NCERT Solutions Class VII Urdu

خواجہ قطب الدین بختیار کاکی

CourtesyNCERT


سوچتے اور بتائیے

1۔حضرت خواجہ قطب الدین بختیار کاکیؒ کا تعلق کس سلسلے سے تھا؟
جواب:حضرت خواجہ قطب الدین بختیار کاکی ؒ کا تعلق چشتیہ سلسلے سے تھا۔

2۔خواجہ قطب الدین بختیار کاکی ؒ کی تربیت کس کی نگرانی میں ہوئی؟
جواب:خواجہ قطب الدین بختیار کاکیؒ کی تربیت ان کی والدہ نے کی۔

3۔قاضی حمید اللہ ناگوریؒ خواجہ بختیار کاکی ؒ کی کس بات پر حیران ہوئے؟
جواب:قاضی حمید اللہ ناگوریؒ بختیار کاکیؒ کی زبان سے قرآن شریف کی آیت سن کر حیران رہ گئے کہ چار برس کا یہ بچّہ چھوٹی سی عمر میں اس طرح کی آیت پڑھ سکتا ہے۔

4۔سفر کے دوران ایک بزرگ نے خواجہ بختیار کاکی ؒ  کو کیا نصیحت کی؟
جواب:سفر کے دوران ایک بزرگ نے یہ نصیحت کی کہ ''دنیا کی چیزوں کی خواہش نہ کرنا،مال و دولت جمع نہ کرنا،جو کچھ ملے اسے خدا کی راہ میں خرچ کر دینا اور اللہ کی عبادت کے سوا دوسرے فضول کاموں میں وقت نہ گنوانا۔

5۔ حضرت خضر نے مولانا ابو حفص کو کیا تاکید فرمائی؟
جواب:حضرت خضر نے مولانا ابو حفصؒ کو تاکید فرمائی کہ پوری توجہ سے انہیں پڑھائیے، ان سے بڑے بڑے کام لینے ہیں۔

6۔حضرت خواجہ بختیارؒ کو ’کاکی‘کیوں کہا جاتا ہے؟
جواب:آپ دہلی میں قیام کے دوران ہمیشہ خدا کی یاد میں محو رہتےاور کسی سے نذرانہ وغیرہ قبول نہیں فرماتے تھے۔ اہل و عیال نہایت تنگی میں دن گزارتے تھے۔جب کبھی گھر میں کچھ نہیں ہوتا تھا تا آپ کی اہلیہ پڑوس میں رہنے والے بقال کی بیوی سے قرض لے کر کام چلاتی تھیں۔ پیسے آنے پر اس کا قرض ادا کر دیتی تھیں۔ روایت ہے کہ ایک روز بقال کی بیوی نے طعنہ دیا کہ اگر میں تمہیں قرض نہ دوں تو تمہارے بال بچوں کا پیٹ کیسے بھرے۔ اس بات سے حضرت کو سخت تکلیف پہنچی۔ آپ نے ارشاد فرمایا کہ آئیندہ کسی سے قرض مت لینا۔ اگر ضرورت پیش آئے تو طاق میں سے کاک(روٹیاں) لے لیا کرو۔ اس کے بعد وہ ضرورت پڑنے پر طاق سے گرم گرم روٹیاں لے لیا کرتیں۔اسی سبب سے خواجہ قطب الدین بختیارکاکیؒ کہلانے لگے۔

7۔حضرت بختیار کاکیؒ کس بادشاہ کے زمانے میں ہندوستان تشریف لائے؟
جواب:حضرت بختیار کاکیؒ بادشاہ شمش الدین التمش کے زمانے میں ہندوستان تشریف لائے۔

8۔حضرت بختیار کاکیؒ، خواجہ معین الدین ؒ کے ساتھ اجمیر کیوں نہیں گئے؟
جواب:پورے شہر کے لوگ اور بادشاہ بھی حضرت خواجہ اجمیریؒ کے پاس آئے اور ان سے گزارش کی کہ حضرت بختیار کاکی کو اجمیر نہ لے جائیں۔حضرت خواجہ اجمیری نے جب لوگوں کی یہ حالت دیکھی تو لوگ رنجیدہ نہ ہوں اس لیے حضرت خواجہ بختیار کاکی کو دہلی میں ہی رہنے کے لیے کہا۔

9۔بختیار کاکیؒ کا مزار دہلی میں کہاں واقع ہے؟
جواب:بختیار کا مزار دہلی کے مہرولی میں ہے۔

واحد جمع الگ الگ کرکے لکھیے

واحد
جمع
خاتون
آیتیں
مکتب
ہدایات
بزرگ
عبادتوں
خواہش
نذرانے
شعر
محفل










ان لفظوں کو جملوں میں استعمال کیجیے

درویش: بختیار کاکیؒ ایک درویش بزرگ تھے۔

نگرانی: بادشاہ نے وزیر کو نگرانی  کی ذمہ داری سونپی۔

حفظ:خالد نے قرآن حفظ کرلیا۔

مامور:درجنوں سپاہی سلطان کی خدمت پر مامور تھے۔

نصیحت:اس نے بادشاہ کو نصیحت کی۔

خوشبو:گلاب کی خوشبو پھیل گئی۔

صحیح جملے پر صحیح اور غلط جملے پر غلط(X)کا نشان لگائیں۔

1۔حضرت خواجہ قطب الدین بختیار کاکی ؒچشتیہ خاندان کے کامل درویش تھے۔

2۔ ان کی بزرگی کی شہرت صرف بغداد میں تھی۔X

3۔حضرت خواجہ معین الدین چشتیؒ اصفہان تشریف نہیں لے گئے۔X

4۔بچپن سے ہی آپ نیک سیرت اور پاک دل انسان تھے۔

5۔پورے شہر کے لوگ اور خود بادشاہ بھی حضرت خواجہ اجمیری ؒ کے پاس آئے اور ان سے گذارش کی کہ حضرت بختیار کاکی ؒ کو اجمیر لے جائیں۔X

ترتیب

Olympic Khel - NCERT Solutions Class VII Urdu

اولمپک کھیل


CourtesyNCERT


سوچیے اور بتائیے

1۔اولمپک کھیلوں کا آ غاز کیسے ہوا؟
جواب: یہ مقابلہ 884 قبل مسیح میں شروع ہوئے اور 776 ق م سے ہر چار سال کے بعد پابندی سے ہونے لگے۔

2۔پرانے زمانے میں اولمپک کھیلوں کا اعلان کس طرح کیا جاتا تھا؟
جواب: پرانے زمانے میں اولمپک کھیل تہوار کے طور پر منائے جتے تھے۔ ان کے شروع ہونے سے قبل پورے یونان میں اعلان کیا جاتا تھا کہ اولمپیا کے مقابلے ہونے والے ہیں۔

3۔اولمپک  کھیلوں میں شرکت کے لیے کھلاڑیوں کے لیے کیا شرطیں تھیں؟
جواب: ان کھیلوں میں حصّہ لینے والوں کے لیے یہ ضروری تھا کہ انہوں نے کوئی جرم نہ کیا ہو۔ ان کے اعمال اچھے اور پاکیزہ ہوں۔ انہوں نے کم سے کم دس مہینے مقابلے کی تیاری کی ہو اور آخری مہینہ اولمپیا میں گزارا ہو۔ 

4۔اولمپک کھیلوں کو بین الاقوامی سطح پر شروع کرنے کی تحریک کس نے کی؟
جواب: ایک فرانسیسی نوجوان 'کوبے نین' نے اولمپک کھیلوں کو بین الاقوامی سطح پر شروع کرنے کی تحریک کی۔

5۔عورتوں کو اولمپک کھیلوں میں حصہ لینے کا موقع کب سے ملا؟
جواب: 1912 میں عورتوں کو اولمپک کھیلوں میں حصّہ لینے کا موقع ملا۔

6۔اولمپک جھنڈا کس بات کی علامت ہے؟
جواب: اولمپک کے جھنڈے کےسفید، پیلے، کالے، سبز، نیلے اور لال دائرے پانچ بر اعظموں ایشیا ، آسٹریلیا، یوروپ، امریکہ ، شمالی امریکہ اور جنوبی امریکہ کی علامت ہیں۔

7۔اولمپک کا موٹو کس زبان میں ہے اور اس کا کیا مطلب ہے؟
جواب: اولمپک کا موٹو لاطینی زبان میں ہے جس کے معنی ہیں: 
اور تیز، اور اونچا، اور مضبوط

8۔اولمپک کھیل کس جذبے سے کھیلے جاتے ہیں؟
جواب: کھیلوں کی اہم بات محض جیتنا نہیں، بلکہ ان میں حصّہ لینا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ کھیل کو کھیل کے جذبے کے ساتھ کھیلنے والا مقابلےمیں ہارنے کے باوجود لوگوں کا دل جیتنے میں کامیاب ہوجاتا ہے۔

نیچے لکھے ہوئے لفظوں کو جملوں میں استعمال کیجیے۔

منعقد کرنا:اولمپک کھیل ہر چار سال پر منعقد ہوتے ہیں۔

عہد کرنا:بہارتی کھلاڑی نے سونے کے تمغے جیتنے کا عہد کیا۔

سنگ تراش:سنگ تراش نے ایک خوبصورت مورتی تراشی۔

پاکیزہ:اس کے جذبات پاکیزہ تھے۔

مقبولیت:وہ مقبولیت کی بلندی پر پہنچ گیا۔

بین الاقوامی:پی ٹی اوشا نے بین الاقوامی مقابلوں میں حصّہ لیا۔

مشعل:اولمپک کی مشعل روشن ہو گئی۔

براعظم:اوشا اس بر اعظم کی سب سے بڑی کھلاڑی بن گئی۔

راجدھانی:اولمپک مقابلے چین کی راجدھانی میں منعقد ہوئے۔

ترتیب

Hamari Tareekh - NCERT Solutions Class VII Urdu

ہماری تاریخ


CourtesyNCERT
سوچیے اور بتائے 

 تاریخ لکھنے والوں کے خیال میں  ہندوستان میں مختلف تیوہار کیسے منائے جاتے تھے؟
تاریخ لکھنے والوں کے خیال ہندوستان میں مختلف تیوہار  بہت اچھے سے منائے جاتے ہے۔

اجنبی ہاتھوں سے شاعر کی کیا مراد ہے؟
اجنبی ہاتھوں سے شاعر کی مراد انگریز ہے

ہماری تاریخ کو کس طرح بدل دیا گیا ؟
انگریزوں نے ہماری تاریخ کو بدل دیا ۔ انگریزوں کے آنے سے پہلے ہمارا وطن  مل جل کر رہتا تھا سارے تیوہار کو ساتھ مناتا  تھا ہندو اور مسلم میں فرق نہی کر تا تھا لیکن انگریزوں میں  نفرت بھر دی اور جاتے جاتے  ہندو مسلم کے بیچ نفرت پیدا کردی۔

ہمارے ملک کی تاریخ کیا رہی ہے ؟
ہمارے ملک کے لوگ ایک ساتھ  مل جل کے تیوہار مناتے تھے بھائ چارے سے رہتے تھے ۔

آزادی ملنے کے باد ہم خود کو کیا محسوس کرتے ہیں 
آزادی ملنے کے بعد ہم اپنی بات  کھل کر کہ سکتے ہیں برا وقت چلا گیا ہے اب بس خوشحالی ہی ہوگی۔

شاعر نے آخری بند میں ایکتا کی کیا پہچان بتانی ہے
ہم ایک ہی وطن میں رہتے ہے  ایک ہی زمین پر ہیں اور ہم ایک ہی نہیں ہمارا فکر و عمل ایک ہی ہے ایک ہی یقین ہے ہمارا



نیچے لکھے ہوئے بند کو مکمل کیجیے

تیری تاریخ ہے قرآن کا، گیتا کا ورق
آشتی، اَمن، اہنسا کے اصولوں کا سبق
دہر سے اپنا مُقابل کوئی اب تک نہ اٹھا
کوئی گوتم، کوئی چشتیؒ، کوئی نانک نہ اٹھا

نیچے لکھے ہوئے لفظوں کو جملوں میں استعمال کیجیے

اجالے: اجالے اپنی یادوں کے ہمارے ساتھ رہنے دو۔

اجنبی: اجنبی شخص سے بے تکلف مت ہو۔

نفرت: غریبوں سے نفرت نہ کرو۔

چالاک: لومڑی ایک چالاک جانور ہے۔

وفا: ہم کو ان سے وفا کی ہے امید۔

امن: دنیا کو امن کا گہوارہ بناؤ۔

آزاد: 1947 میں ملک آزاد ہو گیا۔

ان لفظوں کی جمع لکھیے

تہمت     اتہام

فرنگی     فرنگیوں

فکر     افکار

عمل     اعمال

جذبہ     جذبات


ترتیب

Saturday, October 20, 2018

Aadi Basi - NCERT Solutions Class VII Urdu

آدی باسی
CourtesyNCERT



1۔ آدی باسی کسے کہتے ہیں؟
جواب: دور دراز مقاات پر کچھ لوگ عام آبادی سے الگ اپنے پرانے ڈھنگ سے زندگی گزارتے ہیں انہیں آدی باسی کہتے ہیں۔

2۔ ہندوستان کے آدی باسی قبیلے کہاں کہاں آباد ہیں اور ان کی کیا خصوصیات ہیں؟
جواب: ہندوستان کے آدی اسی قبیلے تین بڑے خطّوں می بسے ہیں۔ ایک جنوبی ہند کے ساحلی سمندر کے پہاڑی علاقوں میں، دوسرے وسطی ہندوستان کے پہاڑوں اور جنگلوں میں اور تیسرے ملک کے شمال مشرقی علاقوں میں۔

3۔ آدی باسیوں کی عام غذا کیا؟
جواب:آدی باسیوں کی عام غذا جنگلی پیداوار اور شکار ہیں۔

4۔ جنوب مغربی ساحل پر آباد قبائل کس طرح زندگی گزارتے ہیں؟
جواب: جنوب مغربی ساحل میں آباد قبائل خانہ بدوش ہیں اور ایک جگہ سے دوسری جگہ آتے جاتے رہتے ہیں۔ دس بارہ خاندن کے لوگ اکٹھے رہتے ہیں۔ وہ پہاڑ کی اونچی چوٹیوں پر جھونپڑی بناتے ہیں۔ آدی باسیوں کی گزر بسر کا انحصار جنگلوں کی پیداوار اور شکار پر ہے۔

5۔ آدی باسی درختوں سے شہد کس طرح حاصل کرتے ہیں؟
جواب:شہد نکالنے کے لیے آدی باسی شہد کے چھتّے والے درختوں میں کھونٹیاں گاڑ دیتے ہیں تاکہ ان پر چڑھنے میں آسانی ہو۔ رات کے وقت یہ ہاتھ میں مشعل لے کر درختوں کے قریب جاتے ہیں تاکہ شعلے کی چمک اور دھنویں کی وجہ سے مکھیاں ڈنک نہ مار سکیں۔ شہد اکٹھا کرنے کا کام ہفتوں تک جاری رہتا ہے۔

6۔ آدی باسی ہرن اورمچھلی کا شکار کس طرح کرتے ہیں؟
جواب: آدی باسی کتوں کی مدد سے ہرنوں کو تنگ گھاٹیوں کے راستے چشموں کے کنارے تک لے آتے ہیں اور پھر  ہر طرف سے ان کا راستہ بند کر دیتے ہیں۔ ہرنوں کو بچنے کے لیے پانی میں کودنا پڑتا ہے جہاں ہرنوں کی رفتار سست ہوجاتی ہے اور اس طرح آدی باسی ان کو پکڑ لیتے ہیں۔
یہ لوگ پانی کو گڑھوں میں روک لیتے ہیں ان میں مچھلیاں پل جاتی ہیں تو پانی میں کسی درخت کی چھال کا سفوف چھڑک دیتے ہیں۔ سفوف پانا میں ملتے ہی مچھلیاں بے دم ہونے لگتی ہیں اور یہ انہیں پکڑ لیتے ہیں۔

قدرت نے آدی باسیوں کو کس دولت سے نوازا ہے؟
جواب: قدرت نے آدی باسیوں کو قناعت کی بڑی دولت دی ہے۔

خالی جگہ کو بھریے

1۔نئے آنے والوں اور پُرانے بسنے والوں میں ٹکراؤ بھی ہوا۔


2۔جنوبی ہندوستان میں بھی آدی باسیوں کے بہت سے قبیلے آباد ہیں۔

3۔وہ پہاڑوں کی اونچی چوٹیوں پر پانی کے چشموں کے قریب جھونپڑی بناتے ہیں۔

4۔آدی باسیوں کے لیے جنگلی جانوروں کے شکار کی بڑی اہمیت ہے۔

5۔مچھلی کے شکار میں عورتیں اوربچّے بھی شوق سے حصّہ لیتے ہیں۔

6۔آدی باسی ہمارے ملک کی رنگا رنگ زندگی کانہایت اہم حصّہ ہیں۔

نیچے دیے گئے لفظوں کو جملوں میں استعمال کیجیے۔

دور دراز: آدی باسی دوردراز حصّوں میں آباد ہیں۔

قد و قامت: وہ قدو قامت میں لمبے چوڑے ہوتے ہیں۔

خانہ بدوش: کچھ آدی باسی خانہ بدوش زندگی گزارتے ہیں۔

دارومدار: ان کا دارومدار جنگلی پیداواروں پر ہوتا ہے۔

دشوار گزار:اس بستی کا راستہ دشوار گزار ہے۔

صحیح بیان کے سامنے صحیح اور غلط کے سامنے غلط کا نشان لگائیے

1۔ بعض علاقے آبادیوں سے دور ہیں اور وہاں پہنچنا بہت مشکل ہے۔ü

2۔ جو لوگ عام آدمی کے ساتھ مل جل کر نئے ڈھنگ سےزندگی گزارتے ہیں انھیں آدی باسی کہتے ہیں۔X

3۔ وسطی ہندوستان کے قبیلے بڑی حد تک ایک دوسرے سے ملتے جلتے ہیں۔ü

4۔ زیادہ  تر قبائلی آبادی کھیتی باڑی کرکے اپنا پیٹ پالتی ہے۔ü

5۔ پانی میں تیرتے ہوئے ہرنوں کی رفتار بہت تیز ہوجاتی ہے۔X

6۔پانی میں سفوف ملتے ہی مچھلیاں اُسے کھانے لگتی ہیں۔X

7۔ آدی باسیوں کے طور طریقے اور رسم و رواج قدیم ہندوستان کی یاد دلاتے ہیں۔ü


ترتیب

Friday, October 19, 2018

Khwaab e Aazaadi - NCERT Solutions Class VIII Urdu

خوابِ آزادی


بہ شکریہ این سی ای آر ٹی

سوچیے اور بتائیے۔
1۔ شاعر نے خواب میں کیا دیکھا؟
جواب: شاعر نے خواب میں دیکھا کہ وہ اب آزاد ہے اور اپنی مرضی کا مالک ہے۔ اب وہ ہر کام کر سکتا ہے جس کا کرنا پہلے جرم تھا۔

2۔ شاعر کے بے خوف ہونے کی کیا وجہ تھی؟
جواب: شاعر اس لیے بے خوف تھا کہ اب وہ آزاد ہے اور قانون اس کا کچھ نہیں بگاڑ سکتا۔

3۔ "خود ہی کوزہ، خود ہی کوزہ گر وہی مضمون ہے" اس مصرعے میں شاعر کیا کہنا چاہتا ہے؟
جواب: شاعر کی مراد یہ ہے کہ وہی قانون بنانے والا اور خود ہی اس پر عمل کرنے والا ہے۔یعنی وہی برتن ہے اور وہی برتن بنانے والا بھی اس لیے اب اسے خوف زدہ ہونے کی ضرورت نہیں۔

4۔ شاعر نے اپنے آپ کو تھانیدار کیوں کہا ہے؟
جواب: شاعر کے خود کو تھانیدار کہنے سے یہ مراد ہے کہ آزاد ہونے کی وجہ سے اب وہ شہر کا حاکم ہے اور وہ خود ہی سرکار ہے لہذا اب وہ صرف نم کا تھانوی نہیں بلکہ تھانیدار ہے۔

5۔ چور بازاری اور شاہ بازاری سے کس طرح گھر بھرا جاسکتا ہے۔
جواب: چور بازاری کے معنی ہیں اشیا میں ملاوٹ کرنا اور شاہ بازاری سے مراد چیزوں کی زیادہ قیمت وصول کرنے سے ہے۔ مثلاً دوگنا تین گنا منافع وصول کرنا یا پھر گھی میں چربی ملانا۔ اس طرح شاعر کو لگتا ہے کہ وہ اپنا گھر بھر سکتا ہے۔

6۔ گاہک کی بربادی گھی میں چربی ملانے سے کیسے ہو سکتی ہے؟
جواب: چربی ملی ہوئی گھی کھا کر گاہک بیمار پڑسکتا ہے اس لیے کہ یہ چربی کسی بھی جانور کی ہو سکتی ہے۔ ملاوٹی کھانا اسے بیمار ڈال کر اسپتال پہنچا سکتا ہے یہاں تک کہ اس کی جان بھی لے سکتا ہے۔

7۔ نیند سے بیدار ہونے کے بعد شاعر اپنے آپ کو کن پابندیوں میں گھرا پاتا ہے؟
جواب: شاعر نیند سے بیدار ہونے پر خود کو اپنی آزادی کی پابدیوں میں گھرا پاتا ہے۔ شاعر سمجھ جاتا ہے کہ آزادی کے بھی کچھ تقاضے ہوتے ہیں اور وہ ان سے چھٹکارا نہیں پا سکتا ہے۔

مصرعوں کو مکمل کیجیے۔

ملک اپنا قوم اپنی اور سب اپنے غلام
آج کرنا ہے مجھے آزادیوں کا احترام

جس جگہ لکھا ہے مت تھوکو!میں تھوکوں گا ضرور
اب سزاوار سزا ہوگا نہ کوئی بھی قصور

میری سڑکیں ہیں تو میں جس طرح بھی چاہوں چلوں
جس جگہ چاہے رکوں اور جس جگہ چاہے مڑوں

کیوں نہ رشوت لوں کہ جب حاکم ہوں میں سرکار ہوں
تھانوی ہرگز نہیں ہوں اب میں تھانیدار ہو

ان لفظوں کو اپنے جملوں میں استعمال کیجیے

احترام: ہمیں مسجد کا احترام کرنا چاہیے۔

سزاوار: وہ اپنے گناہوں کا سزاوار ہے۔

رشوت: رشوت لینا اور دینا دونوں گناہ ہے۔

چور بازاری: چور بازاری سے بچنا چاہیے۔

حقیر: کوئی شے حقیر نہیں ہے۔

ان لفظوں کے متضاد لکھیے

آزادی       غلامی

قید        آزاد

زندہ باد     مردہ باد

غلام        آقا

اسیر      آزاد

بربادی         آباد
ترتیب

Wednesday, October 17, 2018

Ek Makda Aur Makkhi - NCERT Solutions Class VII Urdu


مکڑا اور مکھی
CourtesyNCERT


سوچیے اور بتائیے

1۔ مکڑا مکھی کو اپنے گھر کیوں بلانا چاہتا تھا؟
جواب: مکڑا مکھی کو اپنے گھر بلانا چاہتا تھا کیونکہ وہ بھوکا تھا اور وہ مکھی کو کھانا چاہتا تھا۔ 

2۔ ’’جو آپ کی سیڑھی پر چڑھا پھر نہیں اترا‘‘ سے کیا مراد ہے؟
جواب: اس کا مطلب یہ ہے کہ جو بھی مکڑے کے گھر میں جاتا تھا وہ کبھی واپس نہیں آتا تھا۔

3۔ مکھّی نے مکڑے کو فریبی کیوں کہا؟
جواب: کیونکہ وہ مکڑے کی فطرت سے واقف تھی کہ وہ دھوکے سے بلاکر دوسروں کو کھا جاتا ہے۔

4۔ مکڑے نے اپنے گھر کی کیا کیا خوبیاں بیان کی ہیں؟
جواب: مکڑے نے کہا کہ اس کے گھر میں باریک پردے لگے ہیں، دیواروں پر شیشے لگے ہیں اور مہمانوں کے لیے نرم بچھونے بھی ہیں۔

5۔ مکھّی مکڑے کی باتوں میں کس طرح آگئی؟
جواب: مکڑے نے مکھی کی تعریفیں شروع کردیں اور اس کی خوشامدیں کیں یہاں تک وہ اس کی باتوں میں آگئی۔

مصرعوں کو مکمل کیجیے

1۔ اس راہ سے ہوتا ہے گزر روز تمہارا

2۔ اپنوں سے مگر چاہیے یوں کھنچ کے نہ رہنا

3۔ اُڑتی ہوئی آئی ہو خُدا جانے کہاں سے

4۔ مکڑے نے کہا دل میں سُنی بات جو اس کی

5۔ مکھّی نے سنی جب یہ خوشامد تو پسیجی

6۔ آرام سے گھر بیٹھ کے مَکھّی کو اُڑایا



ان لفظوں کے متضاد لکھیے

عزت
بے عزت
منظور
نا منظور
نادان
دانا
فائدہ
نقصان
آرام
تکلیف
حاضر
غیر حاضر
محبت
نفرت
خوبی
خرابی
انکار
اقرار













املا درست کیجیے

کسمت
قسمت
اِجّت
عزّت
منجور
منظور
کھاتر
خاطر
کلگی
کلغی
ھسن
حسن
سفائی
صفائی
کیامت
قیامت
آدت
عادت














واحد سے جمع بنائیں۔

ذرات
ذرّہ
جہان
دنیا
اشیا
شے
مناظر
منظر
وادیاں
وادی








ترتیب

Tuesday, October 16, 2018

Khalabaz Khwateen - NCERT Solutions Class VII Urdu

خلا باز خواتین


سوچیے اور بتائیے

1۔  خلا کسے کہتے ہیں؟

جواب: ہم کائنات کے ایک چھوٹے سے سیارے یعنی زمین پر رہتے ہیں۔ زمین سے 60 کلو میٹر تک تو خاصی ہوا ہے۔لیکن تقریباً 300 کلو میٹر کے بعد اس کی حدود ختم ہو جاتی ہیں۔ اس سے آگے ایک بے کنار اور سنسان کائنات ہے جہاں آواز، ہوا ، پانی ،روشنی کچھ بھی نہیں ہے۔یہی خلا ہے۔

2۔  خلائی پرواز کی ابتدا کب اور کس ملک نے کی؟

جواب: خلائی پرواز کی ابتدا4 اکتوبر 1957 کو روس نے کی تھی۔

3۔  سب سے پہلے خلا میں کسے بھیجا گیا تھا؟

جواب: سب سے پہلے لائیکا نام کی ایک کُتیا کو اسپوتنک اوّل کے ذریعہ روس نے خلا میں بھیجا۔

4۔  خلا میں جانے والی پہلی خاتون کس ملک کی تھیں اور ان کا نام کیا ہے؟

جواب: خلا میں جانے والی پہلی خاتون روس کی تھیں۔ ان کا نام ویلینٹنا ترشیکوا ہے۔

5۔ خلا میں جانے والی امریکی خاتون کون کون سی ہیں؟

جواب:امریکہ کی تین خواتین  خلا کا سفر کر چکی ہیں۔ ان کے نام  سیلی رائڈ،کیتھی سلیوان اورجوڈتھ ریجنک ہیں۔

6۔  ہندوستانی خلا باز خاتون کا کیا نام ہے؟

جواب: ہندوستانی خلا باز خاتون کا نام کلپنا چاولا ہے۔

7۔ کلپنا نے اپنے کس قول کو سچ کر دکھایا؟

جواب: کلپنا چاولا نے اپنا یہ قول سچ کر دکھایا کہ ’’میں خلائی مِشن کے لیے بنی ہوں اور اسی کے لیے مروں گی۔

خالی جگہ کو بھریے

1۔ یہ در اصل انسان کو خلا میں بھیجنے کی تیاری تھی۔

2۔ خلا بازی کی مہم میں عورتیں بھی پیچھے نہیں رہیں۔

3۔ امریکہ کی تین خواتین کامیابی کے ساتھ خلا کا سفر کر چکی ہیں۔

کلپنا چاولا پہلی ہندوستانی خلا باز ہیں۔

5۔ ان خوابوں کا پورا کرنا ہی کلپنا چاولہ نے اپنی زندگی کا مشن بنا لیا تھا۔

6۔ان کی اس بے مثال قربانی کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔


نیچے لکھے محاوروں اور لفظوں کو جملوں میں استعمال کیجیے

پہل کرنا: نیک کام میں پہل کرنا چاہیے۔

خواب دیکھنا: کلپنا نے بچپن سے ہی خلا میں جانے کا خواب دیکھنا شروع کردیا۔

ٹھان لینا: کلپنا نے ہر حالت میں کامیابی حاصل کرنے کی ٹھان لی۔

خلا: وہ خلا میں پرواز کرنے لگی۔

پرواز: اس کی جہاز کے پرواز کا وقت ہوچکا تھا۔

آلات:خلائی جہاز کے آلات نے کام کرنا بند کردیا تھے۔

الف اور ب کے تحت دیے گئے لفظوں کے جوڑے بنائیے

اسپوتنک           لائیکا

ویلینٹنا ترشیکوا     روس

امریکہ    سیلی رائڈ

ہندوستان           کلپنا چاولا

اسپوتنک اوّل      4 اکتوبر1957

یوری گگارین       12 اپریل 1961

ترتیب

Sunday, October 14, 2018

Ji Aaya Saheb - NCERT Solutions Class VIII Urdu

جی آیا صاحب
بہ شکریہ این سی ای آر ٹی


1۔ انسپکٹر صاحب کا رویہ قاسم کے ساتھ کیسا تھا؟
جواب: انسپکٹر صاحب کا رویہ قاسم  کے ساتھ  اچھا نہیں تھا۔

2۔  قاسم ، انسپکٹر صاحب کے ہر حکم پر کیا کہتا تھا؟
جواب: قاسم انسپکٹر صاحب کے ہر حکم پر جی آیا صاحب اور بہت اچھا صاحب کی گردان کرتا۔

3۔ گھر کا کام قاسم کس ڈھنگ سے کرتا تھا؟
جواب: قاسم گھر کا کام بہت سلیقے سے دل لگا کر کرتا تھا۔

4۔ قاسم کی نیند کس وجہ سے پوری نہیں ہوتی تھی؟
جواب: قاسم کو بہت زیادہ کام کرنا پڑتا تھا ۔ اسے اپنی عمر سے زیادہ کام کرنا پڑتا۔

5۔ قاسم نے پہلی بار کام سے بچنے کے لیے کیا کیا؟
جواب: کام سے بچنے کے لیے قاسم نے تیز دھار چاقو سے اپنی انگلی کاٹ لی تاکہ زخمی انگلی دیکھ کر اسے کام کے لیے نہیں کہا جائے اور وہ کچھ دن آرام کر سکے۔

6۔ چاقو سے انگلی کٹنے کے بعد قاسم کیوں مسکرایا؟
جواب: قاسم کو اپنی نیند صاف نظر آرہی تھی اور وہ اس بات سے خوش تھا کہ اب وہ اپنی نیند پوری کر سکے گا۔

7۔ انسپکٹر صاحب نے آخری مرتبہ انگلی کاٹنے پر اس کے ساتھ کیا کیا؟
جواب: آخری بار انگلی کاٹنے کے بعد انسپکٹر صاحب نے قاسم کو گھر سے نکال دیا اور اس کی بقایہ تنخواہ بھی نہیں دی۔

8۔ ڈاکٹروں نے قاسم کے زخم کے بارے میں کیا رائے دی؟
جواب: ڈاکٹروں نے کہا کہ زخم خطرناک صورت اختیار کر گیا ہے اور اس کا ہاتھ کاٹنا پڑے گا۔

9۔ چارپائی سے لٹکے ہوئے چوبی تختے پر کیا لکھا تھا؟
جواب: نام محمد قاسم ولد عبد الرحمٰن مرحوم
عمر دس سال

واحد سے جمع اور جمع سے واحد بنائیں

فاصلے
فاصلہ
لمحات
لمحہ
حرکت
حرکات
گدھوں
گدھا
دوا
ادویات
کروٹیں
کروٹ
تختہ
تختے










ان لفظوں کے متضاد لکھیے

قابل
ناقابل
راضی
خفا
سفید
سیاہ
کند
تیز
شکست
فتح
صاف ستھرا
غلیظ









نیچے لکھے ہوئے لفظوں کو اپنے جملوں میں استعمال کیجیے

مشغول:  قاسم اپنے کام میں مشغول رہتا۔

جنبش: وہ اپنی جگہ سے جنبش بھی نہ کر سکا۔

لمحات: یہ لمحات خوشگوار تھے۔

انتھک: قاسم انتھک محنت کرتا۔

غلیظ: اس کے کپڑے غلیظ تھے۔

خفگی: میڈم نے خفگی سے دیکھا۔

نوخیز: قاسم نوخیز لڑکا تھا۔
ترتیب

Tuesday, October 9, 2018

Chand Ki Dulhan

چاند کی دُلہن

 چاند کی دُلہن

Monday, October 8, 2018

Shaitaan Ka Darbaar

شیطان کا دربار
 شیطان کا دربار

Do Gaz Zameen - NCERT Solutions Class VII Urdu

دو گز زمین 


Courtesy NCERT

سوچیے اور بتائیے۔

1۔ نچوم کی کیا خواہش تھی؟
جواب: نچوم کی خواہش تھی کہ وہ ایک بڑ زمین کا مالک بن جائے۔

2۔مسافر نے نچوم کو کون سی خوش خبری سنائی؟
جواب: مسافر نے بتایا کہ والگا ندی کے اس پار ایک زمین ہے اس جگہ ایک نئی بستی بسائی جا رہی ہے  اور لوگوں کو مفت زمین دی جا رہی ہے اور جو بھی چاہے وہاں  کوئی بھی زمین خرید  سکتا  ہے۔

3۔خوش خبری سن کر نچوم نے کیا کیا؟
جواب: خوش خبری سن کر نچوم کی بانچھیں کھل گئیں اور وہ وہاں کے لیے روانہ ہو گیا۔

4۔تاجر نے نچوم کو کیا مشورہ دیا؟
جواب: تاجر نے نچوم کو بتایا کہ وہاں سے دور باشکروں کے علاقے میں زمین بہت سستی ہے۔ باشکروں کے پاس زمین بے حساب ہے۔ مگر وہ کیتی باڑی کرنا نہیں چاہتے۔ وہ لوگ بہت سیدھے سادے ہیں کہ اگر تحفے لے جاؤ وہ خوش ہوجائیں گے اور زمین سستے میں بیچ دیں گے۔

5۔ با شکروں نے نچوم کی کیا تواضع کی؟
جواب: باشکروں نے نچوم سے کہا کہ وہ ایک ہزار روبل میں سورج طلوع ہونے سے سورج غروب ہونے تک جتنی زمین چل کر گھیر لے وہ اتنی زمین کا مالک ہو سکتا ہے۔

6۔باشکروں کے سردار نے زمین فروخت کرنے کی کیا شرط رکھی؟
جواب: باشکروں کے سردار نے یہ شرط رکھی کہ سورج نکلنے سے لے کر ڈوبنے تک وہ جتنی زمین پر چلے گا وہ اسے مل جائے گی۔

7۔نچوم آگے کیوں بڑھتا چلا گیا؟
جواب: نچوم زیادہ زمین گھیرنے کی لالچ میں آگے بڑھتا چلا گیا۔ وہ جتنا آگے جاتا اس کے پیروں کے نیچے زرخیز زمین آتی جاتی۔

8۔نچوم کا یہ انجام کیوں ہوا؟
جواب: نچوم کا یہ انجام لالچ کرنے کی وجہ سے ہوا۔


نیچے لکھے ہوئے لفظوں کو جملوں میں استعمال کیجیے۔

حیثیت: ہمیں اپنی حیثیت کے مطابق کام کرنا چاہیے۔

اطمینان: رزلٹ دیکھ کر اسے اطمینان ہوا۔

بقایا: سلیم نے بقایا رقم ادا کردی۔

قطار: بچے قطار میں کھڑے ہو گئے۔

تواضع: مہمان کی تواضع کرنی چاہیے۔

رفتار: گاڑی کی رفتار تیز تھی۔

سفر: دہلی کا سفر کامیاب رہا۔

زرخیز: کھیت بہت زرخیز تھا۔

لالچ: لالچ بری بلا ہے۔

قبضہ: اس نے ہماری زمین پر قبضہ کر لیا۔

احساس: اسے اپنی غلطی کا احساس تھا۔

شرابور: وہ شرم سے شرابور ہوگیا۔


واحد سے جمع اور جمع سے واحد لکھیے۔


جمع
واحد
رقوم
رقم
تحفے
تحفہ
مطالب
مطلب
اطراف
طرف
شرائط
شرط
اعتراضات
اعتراض
ٹوپیاں
ٹوپی
احساسات
احساس
مناظر
منظر
سیٹیاں
سیٹی
انگلیوں
انگلی
حرکات
حرکت
کھونٹیاں
کھونٹی





















ان لفظوں کے متضاد لکھیے۔

اطمینان
بے اطمینان
زرخیز
بنجر
موجود
غائب
بوجھل
ہلکا
دھندلا
صاف
غروب
طلوع









ترتیب

Sunday, October 7, 2018

Maulana Abul Kalam Azad - NCERT Solutions Class VII Urdu

مولانا ابوالکلام آزاد


سوچیے اور بتائیے۔

۱۔ مولانا ابوالکلام آزاد کا اصل نام کیا تھا؟

جواب: مولانا آزاد کا اصل نام محی الدین احمد تھا۔


۲۔ مولانا آزاد کی پرورش کیسے خاندان میں ہوئی؟

جواب: مولانا آزاد کی پرورش مذہبی مزاج کے خاندان میں ہوئی۔


۳۔ مولانا آزاد کو بچپن سے کس بات کا شوق تھا۔

جواب: مولانا آزاد کو بچپن سے مطالعہ کا شوق تھا۔


۴۔ مولانا کا تخلص آزاد کس نے رکھا؟

جواب: مولوی عبد الواحد نے مولانا کا تخلص آزاد رکھا۔


۵۔ مولانا نے کون کون سے اخبار جاری کیے؟

جواب: مولانا نے الہلال اور البلاغ اخبار نکالے۔


۶۔ ہندوستان کو آزاد کرانے کے لیے مولانا آزاد نے کیا خدمات انجام دیں؟

جواب: مولانا نے پر جوش صحافتی خدمات اور خطبات سے ہندوستان کو آزاد کرانے میں اہم کردار ادا کیا۔


۷۔ مولانا آزاد نے کس نظریے کی مخالفت کی؟

جواب: مولانا آزاد نے دو قومی نظریے کی سخت مخالفت کی۔


۸۔ گاندھی جی اور نہرو جی کی نظروں میں مولانا کا کیا مقام تھا؟

جواب: گاندھی جی اور نہرو جی مولانا آزاد کی بہت عزت کرتے اور ان سے اہم باتوں میں مشورہ کرتے تھے۔


۹۔ مولانا آزاد سے انگریز حکمراں کیوں ڈرتے تھے؟

جواب: مولانا بہت اچھی زبان لکھتے اور بولتے تھے۔ ان میں بہت تاثیر تھی ۔ وہ بہت اچھی اور پرزور تقریر کرتے تھے۔ اسی یے انگریز ان سے ڈرتے تھے۔


۱۰۔ آزادی کے بعد مولانا کو کون سا عہدہ دیا گیا؟

جواب: آزادی کے بعد مولانا آزاد ملک کے وزیر تعلیم بنائے گئے۔


۱۱۔ مولانا آزاد نے کون کون سے ادارے قائم کیے؟

جواب: مولانا آزاد نے ساہتیہ اکادمی، سنگیت اکادمی اور للت اکادمی اور انڈین کونسل فار کلچرل ریلیشنس نامی ادارے قائم  کیے۔


۱۲۔ مولانا آزاد کی دو مشہور کتابوں کے نام لکھیے؟

جواب: مولانا آزاد کی دو مشہور کتابیں ترجان القران اور غبار خاطر ہے۔


۱۳۔ مولانا آزاد کا انتقال کب ہوا؟

جواب: مولانا کا انتقال ۱۹۵۸ میں ہوا۔


خالی جگہ کو صحیح لفظ سے بھریے۔

۱۔ مولانا ابولکلام آزاد مکہ میں پیدا ہوئے۔

۲۔ مولانا آزاد کو بچپن ہی سے مطالعہ کا شوق تھا۔

۳۔ انہوں نے ۱۳ برس میں فارسی کی تعلیم مکمل کی۔

۴۔ مولانا بیس سال کی عمر میں اخبار الہلال کے ایڈیٹر بنے اور بڑا نام پایا۔

۵۔ ہندوستان کی آزادی کی جدوجہد میں مولانا نے بہت اہم کردار ادا کیا۔

۶۔ انہوں نے متحدہ قومیت اور ہندو مسلم اتحاد پر زور دیا۔

۷۔ مولانا آزاد گاندھی جی اور پنڈت نہرو سے بہت قریب تھے۔

۹۔ آزادی کے بعد وہ پہلے وزیر تعلیم بنے۔

ان لفظوں کے متضاد لکھیے۔


پسند
ناپسند
خراب
اچھا
زندگی
موت
آغاز
انجام
آزادی
غلامی
نفرت
محبت
عزت
بے عزت
بہادر
کمزور












واحد سے جمع اور جمع سے واحد لکھیے۔


جمع
واحد
خاندانوں
خاندان
خطبات
خطبہ
خوابوں
خواب
مضامین
مضمون
نظریات
نظریہ
زبانیں
زبان
تقریریں
تقریر
حکمرانوں
حکمراں
مقالات
مقالہ
مکاتیب
مکتوب
اوقات
وقت
موم بتیاں
موم بتی
انگریزوں
انگریز




















مذکر اور مونث الگ کیجیے۔


مونث
مذکر
کتاب
نام
جیب
مطالعہ
موم بتی
شوق
لحاف
والد
عزت
وقت
زبان
بازار
تقریر
دوست
جدوجہد
مشورہ
آزادی
















نیچے لکھے ہوئے لفظوں کو جملوں میں استعمال کیجیے۔

پرورش: مولانا آزاد کی پرورش مذہبی خاندان میں ہوئی۔

مطالعہ: مولانا آزاد کو کتابوں کے مطالعے کا شوق تھا۔

تعلیم: انہوں نے فارسی کی تعلیم مکمل کی۔

حافظہ: مولانا کا حافظہ بہت اچھا تھا۔

مجاہد: مولانا آزاد مجاہد آزادی تھے۔

محّب وطن: مولانا آزاد سچّے محب وطن تھے۔

ایڈیٹر: مولانا آزاد الہلال اخبار کے ایڈیٹر تھے۔

نظر بند: مولانا آزاد رانچی میں نظر بند تھے۔


ترتیب

خوش خبری