آئینہ کے رکن بنیں ؞؞؞؞؞؞؞ اپنی تخلیقات ہمیں ارسال کریں ؞؞؞؞؞s؞؞s؞؞ ٓآئینہ میں اشتہارات دینے کے لئے رابطہ کریں ؞؞؞؞؞؞؞؞؞ اس بلاگ میں شامل مشمولات کے حوالہ سے شائع کی جاسکتی ہیں۔

Saturday, 26 December 2020

Bahaar Ke Din By Afsar Merathi NCERT Class 9 Jaan Pechan

بہار کے دن
 حامد اللہ افسر میرٹھی
(1898 - 1974)

حامد اللہ افسر میرٹھی میرٹھ میں پیدا ہوئے۔ 1930 میں میرٹھ کا لج میرٹھ سے بی۔ اے کیا۔ پھر علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں ایل ۔ ایل۔ بی کے لیے داخل ہوئے۔ اسی دوران جبلی کا لج لکھنؤ میں اردو کے استاد مقرر ہوئے اور ترقی پا کر وہیں وائس پرنسپل بنائے گئے ۔ 1950 میں وہاں سے سبک دوش ہوئے۔ ان کا انتقال لکھنؤ میں ہوا۔

انھوں نے بچوں کے لیے اسمعیل میرٹھی کی طرح چھوٹی چھوٹی نظمیں لکھی ہیں ۔ بچے ان کی نظمیں دل چسپی سے پڑھتے ہیں ۔ ان کی زبان سادہ اور عام فہم ہوتی ہے۔ انھوں نے بچوں کے لیے سولہ کتابیں لکھی ہیں جن میں سے آسمان کا ہم سایہ ' لوہے کی چپل' ،' درسی کتب',' پیام روح' اور نقد الادب بہت مقبول ہیں۔

غور کیجیے:

* اس نظم میں ہر شعر کے قافیے بدل جاتے ہیں، قافیہ شعر کے آخر میں آنے والے ان لفظوں کو کہتے ہیں جن کی

آوازیں یکساں ہوتی ہیں ۔ جیسے بہار/ نکھار، چٹک/ مہک، خوش بور / ہر سو، و غیره


سوچنے اور بتایئے:

1- بہار کے زمانے میں باغ کا منظر کیسا ہوتا ہے؟

2۔ آدمی پر بہار کا کیا اثر ہوتا ہے؟

3. بہار کی صبح ، شام اور رات کیسی ہوتی ہے؟


قواعد:

نظم کے یہ مصرعے پڑھیے

1۔ شاخوں کا بنالیا ہے جھولا

2۔ چادر ایک نور کی تنی ہے

ان مصرعوں میں ’’ شاخوں‘‘ کو جھولے سے اور" نور " کو چادر سے تشبیہ دی گئی ہے۔

عملی کام:

اس نظم کے پانچ شعر زبانی یاد کر کے استاد کو سنایئے۔


0 comments:

Post a Comment

خوش خبری