آئینہ کے رکن بنیں ؞؞؞؞؞؞؞ اپنی تخلیقات ہمیں ارسال کریں ؞؞؞؞؞s؞؞s؞؞ ٓآئینہ میں اشتہارات دینے کے لئے رابطہ کریں ؞؞؞؞؞؞؞؞؞ اس بلاگ میں شامل مشمولات کے حوالہ سے شائع کی جاسکتی ہیں۔

Sunday, September 1, 2019

Taleem-e-niswaan


تعلیم نسواں


اقصیٰ  عثمانی            

ماں کی گود بچے کی پہلی درس گاہ ہوتی ہے یہی سبب ہے کے معاشرے میں  لڑکیوں کی تعلیم کو ضروری قرار دیا   گیا ہے کے اگر ایک لڑکی تعلیم یافتہ بن جاتی ہے تو اس کا گھر علم کا ۔گہوارہ بن جاتا ہے۔ اسلام نے بھی عورت کو معاشرے میں عزت  کا مقام دیتا ہے اور  وہ عورتوں کی دینی و دنیاوی تعلیم کے حصول پر زور دیتا ہے
اس زمانے میں لڑکیوں کی تعلیم پر بھرپور توجہ دی گئ ہے اور لڑکیاں تعلیم کے میدان میں مسلسل آگے بڑھ رہی ہیں وہ علم کے ہر میدان میں ترقی کی طرف گامزن ہیں مقابلہ جاتی امتحان میں بھی وہ لڑکوں پر بازی مار رہی ہیں  یہ سب سماج میں لڑکیوں کی تعلیم کو اہمیت دینے اور اس پر توجہ دینے کا نتیجہ ہے آج ہر جگہ اسکول اور مدرسے کھل رہے ہیں جس میں
 لڑکیوں کی تعلیم پر بھرپور توجہ دی جا رہی ہے مدرسہ البنات جہاں صرف لڑکیوں کو تعلیم دی جاتی ہے اسکی تعداد بھی روز بروز بڑھتی جا رہی ہے دینی تعلیم کے ساتھ ساتھ لڑکیاں دنیاوی تعلیم میں بھی بڑھ چڑھ کر حصہ لے رہی ہیں وہ سائنس کے میدان میں بھی آگے بڑھ رہی ہیں انجینئرنگ اور ڈاکٹری کی تعلیم بھی اب انکے لیے آسان ہے گئی ہے ہماری حکومت بھی تعلیم نسواں پر بھرپور توجہ دے رہی ہے اور اس سلسلے میں اداروں کو بھی فراہم کرتی ہے لڑکیوں کے لئے وظیفے کا بھی خصوص انتظام ہوتا ہے آج سماج کے ہر طبقے میں لڑکیوں کی تعلیم کی اہمیت کو سمجھا جاتا ہے اور والدین اپنی بیٹیوں کو پڑھنے میں فخرمحصوس کرتے ہیں وہ اپنے بجٹ کا بڑا حصہ اپنی بیٹیوں پر خرچ کرتے ہیں زمانے میں تعلیم حاصل کرنا آسان نہیں رہ گیا ہے لیکن اس کے باوجود تعلیم حاصل کرنے کے جذبے میں کوئی کمی نہیں آ رہی ہے اسکول اور مدرسوں میں لڑکیوں کی ایک بڑی تعداد نظر آتی ہے تعلیم نسواں کی اہمیت کو لوگوں نے سمجھ لیا ہےاور سبھی اپنے بچوں کو دینی و دنیاوی تعلیم سے بہرہوار کرنا چاہتے ہیں  تاکہ وہ اپنے خاندان اور سماج کے لیے کارآمد ثابت ہوں  آج تعلیم کے میدان میں لڑکیوں اور لڑکوں کا فرق تقریباً ختم ہو چکا ہے اور تعلیم نسواں کی ضرورت اور کامیابی کا جو خواب ہمارے بزرگوں نے دیکھا تھا اسکے شرمندہ ٔ تعمیر ہونے کا وقت آگیا ہے۔




Sunday, August 18, 2019

Yadgar-e-Ghalib ki roushni mein Ghalib By Tahsin Usmani

یادگار غالب" کی روشنی میں'' 
غالب کی شاعری اور شخصیت کا جائزہ

از تحسین عثمانی







(بہ شکریہ ریختہ ڈاٹ کام)

Saturday, August 17, 2019

ُFan pare


فن پارے
ڈاکٹر عبد الوحید
20-08-2019
آدابِ مجلس
انسانو کو جب کسی جگہ مل بیٹھنے کا موقع میسر  آئے تو سب سے اہم اور ضروری چیز یہ ہے کہ ایک دوسرے کی بات کو نہایت صبر و سکوں سے سنا جائے
باتمدللاور معقول طریقے پر کی جائے
کسی کی بات کو درمیان میں ٹوکا نہ جائے گفتگو بہت شریفانہ اور با مذاق ہو
ایسے مذاق سلیم کا مظاہرہ کیا جائے جو شرف انسانیت کے شایان شان ہو کسی کو شکایت پیدا ہونے کا موقع نہ دیا جائے دل آزاری کی کوئی بات نہ کی جائے نشست و برخاست میں تہذیب اخلاق اور مروت کا ثبوت دینا چاہیے
دو یا چار آدمی اگر آپس میں گفتگو کر رہے ہوں تو بلا اجازت اُن کی بات میں دخل
دینا  نہایت معیوب بات ہے جہاں جگہ میلے بیٹھ جائے کسی کو اٹھا کے اسکی جگہ بیٹھنا آدابِ مجلس کے خلاف ہے تکیا لگاکر یہ پاوں پھیلا کر بیٹھنا بہت بڑا اور آدابِ مجلس کے خلاف ہے مجلس میں کسی کی غیبت کرنا اور ہنسی اڑانا بہت نا پسندیدہ فعل ہے
اسلام نے خاص طور پر غیبت کو سختی سے روکا ہے
19-08-2019
آدابِ ملاکات
ملاقات آپس میں انس و محبت  اور ہمدردی پیدا کرنے کا ذریعہ ہے اسے اجنبیت دور ہوتی ہے دل کو دل سے راہ ہوتی ہے بوقت ضرورت جان پہچان کا پاس کرتے ہوئے مدد کرنا لازم ہو جاتا ہے
ملاقات میں خلوص اور ہے غرضی دل میں انمٹ جگہ پیدا کر لیتی ہے
سلام میں ہمیشہ سبقت کی کوشش کرنی چاہیے
چھوٹا بڑے کو، راستہ چلنے والا بیٹھے ہوئے کو،سوار پیدل کو اور تھوڑے آدمی بہتوں کو سلام مصافحہ  معانقہ حسب روایت کیا جا نا چاہیے
ملاقات میں اعتدال کو مدنظر رکھنا چاہیے کثرت ملاقات اور طوالت بار خاطر بن جاتی ہے-
ملاقات کے وقت ایک دوسرے کا احترام ملحوظ رہے نارو اغير ضروری گفتگو سے اجتناب ہو بے تکلف دوستی میں بھی بد کلامی اور بدتمیزی کو قریب نا آنے دیا جائے-

ہمیشہ اخلاق حسنہ کا مظاہرہ کیا جائے تاکہ دیکھنے والے بھی اچھا اثر قبول کرے۔
18-08-2019
آدابِ لباس
پوشاک انسانی تمدن کی اہم ضرورت ہے۔ ہر ملک کی آب و ہوا اور تہذیب کے مطابق اس کے استعمال میں اختلاف ناگزیر ہے۔ 
مردوں کو ایسا لباس زیبِ تن کرنا چاہیے جو ستر پوش ہو۔ فرائض کی ادائیگی میں رکاوٹ نہ بنے اور غرور اور نخوت پیدا نہ کرے۔
طبقۂ نسواں کے لیے ایسا لباس ہونا ضروری ہے جو ان کی زینت کو چھپائے۔ ان کی عزت و آبرو کا محافظ اور وقار کا حامل ہو۔
مردوں کے لیے بھڑکیلے قسم کے لباس کا استعمال ن کی مردانگی کے منافی اور مضحکہ خیز ہے۔ انسان پر لازم ہے کہ لباس سلیقے سے پہنے اور موقع محل کے مطابق سلیقہ سے استعمال کرے۔ بھونڈے اور بد وضع لباس سے پرہیز لازم ہے۔
حضور سرور دوعالم صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد  عالی ہے کہ النّاس باللبّاس یعنی انسان لباس سے پہچانا جاتا ہے۔

 یہ ضروری نہیں ہے کہ لباس قیمتی ہو۔ البتہصاف ستھرا ہونا چاہیے۔

17-8-2019
آدابِ طعام 
کھانا کھانے سے پہلے ہاتھ دھونا، کلی کرنا، شروع کرتے وقت بسم اللہ الرحمٰن الرحیم پڑھنا، اپنے آگے سے کھانا، ادھر ادھر ہاتھ نا چلانا، اگر کسی چیز کی ضرورت ہو تو سلیقے سے طلب کرنا، کھانا اطمنان سے چبا چبا کے کھانا،  چھینک وغیرہ آئے تو منہ پیچھے کی طرف کر لینا، خلاف طبع کوئی چیز ہو تو ناک بھوں نا چڑھانا، پانی ٹھہر ٹھہر کر پینا، کھانا ختم  ہو نے پر خدا کا شکر ادا کرنا، ہاتھ دھو کر اور کلی کر کے تولیے سے ہاتھ منہ پوچھنا آداب طعام میں شامل ہے۔
کھانا کھاتے وقت غیر ضروری باتوں سے پرہیز کرنا چاہیے، ان باتوں سے اجتناب کرنا بھی آداب میں شامل ہے جو شریک طعام اصحاب کو ناگوار خاطر ہوں۔ ہر حالت میں محفل کے وقار اور شرکائے مجلس کے احترام کو ملحوظ رکھنا چاہیے۔

Neki aur badi

نیکی اور بدی

1. نظم کے پہلے بند میں دنیا کو کس طرح کی بستي بتایا گیا ہے
جواب: اس نظم میں دنیا کو ایک ایسی بستی بتایا گیا ہے جو امیروں کے لیے تو مہنگی ہے اور غریبوں کے لیے سستی ہے۔ دنیا میں ہر وقت جھگڑے اور عدالتیں ہیں اور جو یہاں مست ہیں وہ مستی سے رہتے ہیں اور جو سست ہیں ان کے لیے پستی ہے۔

2. کچھ دیر نہیں اندھیر نہیں سے شاعر کی کیا مراد ہے
جواب: کچھ دیر نہیں اندھیر نہیں سے شاعر کی مراد ہے کے اگر ابھی مصیبت ہے پھر بھی کچھ وقت کے بعد اُس کا حل نکل جائے گا  اور پریشانی ختم ہو جائیگی۔ مشہور مقولہ ہے اللہ کے گھر دیر ہے لیکن اندھیر نہیں۔

3. کس کی ناؤ پار اترتی ہے
جواب: اس شعر کامطلب ہے جو دوسروں کی مدد کرتا ہے اللہ  بھی اس کی مدد کرتا ہے- یعنی جو دوسروں کی نیّا پار اتارتا ہے اس کی بھی ناؤ پار لگ جاتی ہے۔

4. ظالم کو ظلم کا کیا بدلہ ملتا ہے
جواب: ظالم کو اس کے ظلم کی بدترین سزا ملتی ہے۔ اگر وہ ناحق کسی کا خون بہاتا ہے تو پھر اس کا خون بھی ندی نالوں میں بہہ جاتا ہے۔ ہر ظالم کو سزا ملنی یقینی ہے۔


محاوروں کو جملوں میں استعمال کیجیے
جیسی کرنی ویسی بھرنی    
بول بالا ہونا
پار اتارنا 
مان رکھنا

Thursday, August 15, 2019

GHAZAL-MARNE KI DUAEIN KYUN MAANGU--AHSAN JAZBI

غزل

(معین اخسن جذبی)


مرنے کی دعائیں کیوں مانگوں، جینے کی تمنا کون کرے
یہ دنیا ہو یا  وہ دنیا، اب خواہش دنیا کون کرے

جب کشتی ثابت و سالم تھی، ساحل کی تمنا کس کو تھی
اب ایسی شکستہ کشتی پر، ساحل کی تمنّا کون کرے 

جو آگ  لگائی تھی تم نے، اس کوتو بجھایا اشکوں نے
جو اشکوں نےبھڑکائی ہے، اس آگ کو ٹھنڈاکون کرے

دنیا نے ہمیں چھوڑا جذبی، ہم چھوڑ نہ دیں کیوں دنیا کو
دنیا کو سمجھ کر بیٹھے ہیں،  اب دنیا دنیا کون کرے

GHAZAL-CHALE BHI AAO KE GULSHAN KA KAROBAR CHALE-FAIZ AHMAD FAIZ

غزل
(فیض احمد فیض)
گلوں میں رنگ بھرے باد نو بہار چلے
چلے بھی آؤ کے گلشن کا کاروبار چلے 

قفس اُداس ہے یاروں صبا سے کچھ تو کہو
کہیں تو بہرِ خدا آج ذکرِ یار چلے

بڑا ہے درد کا رشتہ یہ دل غریب سہی
تمہارے نام پہ آئیں گے غمگسار چلے

جو ہم پہ گزری وہ گزری مگر شب ہجراں
ہمارے اشک تیرے عاقبت سنوار چلے

مقام فیض کوئی راہ میں جچا ہی نہیں
جو کوئے یار سے نکلے تو سوئے دار چلے

GHAZAL-MOMIN KHAN MOMIN

غزل 

(حکیم مومن خاں مومن )

غیروں پر کھل نہ جائے کہیں راز دیکھنا
میری طرف بھی غمزہ غمّازدیکھنا

اُڑتے ہی رنگ رخ مرا نظروں سے تھا نہاں
اس مرغ پر شکستہ کی پرواز دیکھنا

دشمنام یار طبع حزیں پر گراں نہیں
اے ہم نفس نزاکت آواز دیکھنا

دیکھ اپنا حال زار منجم ہوا رقیب
تھا سازگاز طالع نا ساز دیکھنا

کشتہ ہوں اس کی چشم فسوں گر کا اے مسیح
کرنا سمجھ کے دعوۓ اعجاز دیکھنا

ترک صنم بھی کم نہیں سوزِ حجیم سے
مومن غم مآل کا آغاز دیکھنا

khwaja meer dard - GHAZAL

غزل
خواجہ میر درد

تہمت چند اپنے ذمے دھر چلے
جس لیے آئے تھے ہم سو کر چلے

زندگی ہے یا کوئی طوفان ہے
ہم تو اس جینے کے ہاتھوں مر چلے

دوستوں دیکھا تماشہ یاں کا بس
تم رہو اب ہم تو اپنے گھر چلے

شمع کے مانند ہم اس بزم میں
چشم نم آئے تھے دامن تر چلے

درد کچھ معلوم ہے یہ لوگ سب
کس طرف سے آئے تھے کیدھر چلے

Aaina Calendar-2019

آئینہ کی جانب سے سالِ نو کاایک خوبصورت تحفہ


سال ۲۰۱۹ کا اسلامی کلنڈر اپنے موبائل یا کمپیوٹر پر دیکھنے کے لئے یہاں یا نیچے کلنڈر پر کلک کریں۔









Wednesday, August 14, 2019

AE SHAREEF INSANO---NCERT SOLUTION CLASS X URDU


اے شریف انسانو


روحِ تعمیر کے زخم کھانے سے شاعر کی کیا مراد ہے
جواب 

دھرتی کی کھوج بانجھ ہونے سے کیا مطلب ہے
جواب

شاعر نے جنگ کو امن عالم کا خون کیوں کہا ہے
جواب

laai hayat aai qaza le chali chale-NCERT SOLUTION CLASS X URDU

لائی حیات آئے قضا لے چلی چلے


پہلے شعر میں شاعر کیا بات کہنا چاہتا ہے
شاعر کہنا چاہتا ہے کہ زندگی اسے دنیا میں لائی تو وہ آگیا موت اسے لے جا رہی ہے تو وہ جارہا ہے


ابھی آئی ابھی چلے سے شاعر کی کیا مراد ہے
اس شعر سے شاعر کی مراد ہے کہ وہ ابھی تو آیا تھا اور اسے ابھی ہی جانا پڑ رہا ہے

دنیا سے دل لگانے کے کیا معنی ہے
جواب

شاعر نے عقل پر فخر کر نے سے کیوں منہ کیا ہے
جواب



ان لفظوں کے متضاد لکھیے                                                                        


بریمرگبہترخوشیحیات
اچھی زندگی بدتر غم قضا

ribaayat

رباعیات

1. دل میں فروتنی کو جگہ کوں دیتا ہے؟
جواب خدا جسکو رتبہ دیتا ہے وہ دل میں فروتنی کو جگہ دیتا ہے۔



2. اپنی ثنا آپ کون  کرتا ہے؟
جواب جن کا دماغ خالی ہوتا ہے وہ اپنی ثنا آپ کرتا ہے۔



3. خالی ظرف سے صدا دینے سے کیا مراد ہے؟
جواب



4. شاعر نے دنیا کو سرائے فانی کیوں کہا ہے؟
جواب شاعر نے دنیا کو سرائے فانی اسلئے کہا ہے کیوں کی یہاں ہر چیز فنا ہوجانے والی ہے۔



5. بڑھاپا اور جوانی کے لیے شاعر نے کیا فرق بتایا ہے؟
جواب شاعر بڑھاپا اور جوانی کے لیے یہ فرق بتایا کے جوانی وہ تھی جو آ کر چلی گئ بڑھاپا یہ ہے کہ جو آیا ہے تو جائے گا نہیں۔

KAATH KA GHODA--NCERT SOLUTION CLASS X URDU

کاٹھ کا گھوڑا
بندو کو کاٹھ کا گھوڑا کیوں کہا گیا ہے
جواب: بندو ایک نہایت سست انسان تھا اور ہر کام بہت دھیرے کرتا تھا اس لیے اسے کاٹھ کا گھوڑا کہا گیا ہے۔ 


بندو کی سست رفتاری کا اثر کن کن لوگوں پر پڑا
جواب وزیر ملک کے بڑے بڑے کارخانے دار کاروباری سیٹھ دفتروں کے افسر دکاندار وردیوں والے فوجی پولیس والے عام آدمی سودا سلف خریدنے کے لئے گھروں سے نکلی عورتیں اسکولوں اور کالجوں کے بچے ڈاکٹر نرس انجینئر ان سب پر بندی کی سست رفتاری کا اثر پڑا


وزیر کی بے چینی کا سبب کیا تھا؟
جواب: کیونکہ غیر ملکی  وفد سے ملنے کا وقت قریب آرہا تھا۔


کاروبار کے لئے پل کے معنی لاکھوں کے گھاٹے کے کیوں ہیں
جواب: کاربار میں ایک پل میں لاکھوں کے گھاٹے ہوجاتے ہیں۔ اس لیے ان کےلیے پل کے معنی لاکھوں کا گھاٹا ہوتے ہیں۔ 


چندو کے بارے میں بندو کے ذہن میں کیا خیال آیا 
جواب اُسکے ذہن میں کھیل آیا کے اُسکے بیٹا چندو اسلئے اسکول نہیں جا پایا کیونکہ وہ اُسکیلیے ضرورت کی چیزیں جوتا نہیں پایا

نیچے لکھے ہوئے لفظوں سے جملے بنائے


قطار:  بندو کے پیچھے گاڑیوں کی لمبی قطار ہے۔

رفتار: گاڑی کی رفتار بہت دھیمی تھی۔

کیفیت: مریض کی کیفیت اچھی نہیں تھی۔

فخر: ۔استاد کو اپنے شاگردوں پر فخر ہے۔

دشوار: لوگوں کے لیے اس مہنگائی میں جینا دشوار ہوگیا ہے۔

حرکت: سیما کی اس حرکت سے مینا بہت ناراض ہوئی۔




INTERNET--NCERT SOLUTION CLASS X URDU

اانٹرنیٹ

مواصلاتی نظام کیسے کہتے ہیں اور اسمیں کوں سے وسائل شامل ہیں
جواب مواصلاتی نظام انٹرنیٹ کوں کہتے ہیں

انٹرنیٹ کس طرح کام کرتا ہے
جواب


ای میل بھیجنے کا کیا طریقہ ہے
جواب

موڈیم کیسے کہتے ہیں 
جواب موڈیم ایک آلہ ہے جو کمپیوٹر کے اعداد و شمار اور عبارتوں کو ایک خاص قسم کے اشاروں میں تبدیل کردیتا ہے

بینک کے نظام میں انٹرنیٹ کس طرح مفید ہے
جواب ہم جو  اے ٹی ایم استعمال کرتے ہے یہ انٹرنیٹ کے ذریعے کام کرتی ہے  ہمارا بینک کھا تا دنیا کے کسی بھی حصے میں ہو اسے انٹرنیٹ کے ذریعے کہیں بھی استعمال کیا جا سکتا ہے

ای ٹکٹ کیسے کہتے ہیں
جواب کسی بس ریل ہوائی جہاز کی ٹکٹ ہم انٹرنیٹ کے ذریعے کرا سکتے ہیں اسے ای ٹکٹ کہتے ہے

انٹرنیٹ سے طلباء کو کیا فائدہ ہے
جواب طلب علم اس کے ذریعے اپنی تعلیم آسانی سے پورا کے سکتے ہیں

واحد اور جمع

اخبارات کتبمعلوماتماہریناطلاعاتتصاویر
اخبار کتاب معلوم ماہر اطلاع تصویر

Awanti

اونتی




اونتی نے زمین کا مرکز کہا بتایا
اونتی نے کہا ٹھیک جگہ میرے گدھے کہ دایاں پیر ہے وہی زمین کا مرکز ہے
آسمان میں کتنے تارے ہیں اونتی  نے اس سوال کا کیا جواب دیا
اونتی نے کہا جیتنے اُسکے گدھے کے بدن پر بال ہیں اتنے آسمان میں تارے ہیں



سرائے والے اور مزدور میں کیا جھگڑا تھا
جواب مزدور نے سارے والے کی مرغی کا کباب کیا اگلے دیں ساری والے نے اسے مرغی کے کباب کے ہزار روپے مانگے یہ بول کر کے جو مرغی اُسنے کھائی وہ اندا دیتی اور اس انڈے میں سے اور مرغیاں ہوتی تو مزدور کو اُن سب کا پیسہ دینا ہوگا لیکن مزدور نے اتنے پیسے دینے کے لیے منہ کے دیا اسی وجہ سے اُن دونوں میں جھگڑا ہوا



سوال اونتی نے سرائے والے اور مزدور کے جھگڑے کو حل کرنے کے لیے کیا دلیل دی
جواب اُسنے کہا جس طرح بھونے ہوئے گیہوں سے پودے بھی اگتے ویسی ہی بھونے ہوئی مرغی بھی انڈے نہیں دے سکتی ہے



نیچے لکھے ہوئی محاوروں کو جملوں میں استعمال کیجیے



نیچا دکھانا لوگ اونتی کو نیچا دیکھاتے تھے



منہ لٹکانا سارے تجاری منہ لٹکے کر چلے گئے



بغلیں جھاںکنا اونتی کا جواب سن کر تجاری اپنے بلغیں جھانکنے لگا

Pani ki aalodgi -- NCERT SOLUTION CLASS X URDU

پانی کی آلودگی

آلودگی سے کیا مراد ہے
جواب آلودگی سے مراد گندگی میل ہے


سوال  کھانے پینے کی چیزیں کس طرح آلودہ ہو جاتی ہے
جواب کھانے کی چیزیں اگر کھلی چھوڑ دی جائے تو  مکھیاں گرد اور بیماری پھیلانے والی جراثیم اُن کا آلودہ اور کردیتے ہے


سوال پانی حاصل کرنے کے قدرتی ذریعے کون کوں سے ہیں
جواب بارش ندیاں تالاب پانی حاصل کرنے کے قدرتی طریقے ہے


پانی کی آلودگی کس طرح پیدا ہوتی ہے
جواب بولیوں  تالابوں اور نہروں کے پانی میں کپڑے دھوئیں جاتے ہیں مویشیوں کو نہلایا جاتا ہے انسان بھی وہیں نہتے ہے اس طرح انسانوں اور جانوروں کی ساری گندگی بولیوں اور تالابوں میں داخل ہوجاتی ہے اور پانی آلودہ ہوجاتا ہے نالیوں کی گندگی اور کڑا کرکٹ بھی بیماریوں کا سبب بنتا ہے کارخانوں سے نکلا میل کچیل اور کیڑے مرنے والی دوائیں بھی پانی کی آلودگی میں اضافہ کرتی ہیں


شاہروں کی گندگی کس طرح دریاؤں میں شامل ہو جاتی
 جواب



آلودہ پانی کو پینے کے قابل کیسے بنایا جاتا ہے
جواب آلودہ پانی کو پینے کے قابل بنانے کے لیے اسے جوش سے کر ٹھنڈا کریں اور چاں کر کسی برتن میں رکھیں پانی کوں جوش دیتے وقت چٹکی پوٹاشیم پر میگنیٹ ڈالنے سے جراثیم مر جاتے ہیں گدلا  پانی  صاف کرنے کے لیے  اُسنے پھٹکڑی کے ٹکڑے ڈالنے کے بعد اسے کپڑے سے چھان لیں چاہیے اس طرح مٹی کے زراعت تہ میں بیٹھ جاتے ہیں اور پانی صاف ہو جاتا ہے


نیچے لکھے ہوئے لفظوں سے جملے بنائے


صحت صحت اللہ کی دی ہوئی بہت بدی نعمت ہے


آلودگی آلودگی سے کئی بیماریاں ہوئی ہے


گردو غبار


جراثیم بیماری پھیلانے والے جراثیم کھانے کو آلودہ کر رہے ہیں


دریا دریا کا پانی بھی آلودہ ہوتا جا رہا ہے


قدرتی بارش پانی حاصل کرنے کے قدرتی طریقے ہے


تالاب تالاب میں مچھلیاں تیر رہی تھی



واحد اور جمع


زخیراخرابیذراتاقسام
باقرار خرابیاںذریعہقسم

KARTOS--NCERT SOLUTION CLASS X URDU

 کارتوس

وزیر علی کے کارنامے سن کر کس کے کارنامے یاد آتے ہیں؟
وزیر اعلی کے کارنامے سن کر رابن ہود کی کارنامے یاد آتے تھے

سعادت علی کو انگریزوں نے اودھ کے تخت پر کیوں بیٹھایا؟
اُسنے انگریزوں کوں اپنی آدھی مملکت دے دی اور دس لاکھ روپے نقد

کرنل سے کارتوس مانگنے والا سوار کوں تھا؟
کرنل سے کارتوس مانگنے والا سوار وزیر اعلی تھا

نیچے دیے ہوئے لفظوں سے جملے بنائے

تخت۔ انگریزوں نے ہندوستان کا تخت چھین لیا

خلاف ۔ ہندوستانی انگریزوں کی حکومت۔ کے خلاف تھے

پاک

بہادر۔ زین بہت بہادر لڑکا ہے

جان باز وزیر علی ایک جان باز آدمی تھا

وظیفہ انگریزوں نے وزیر اعلی کو تین لاکھ روپے وظیفہ مقرر کیا

اسکیم۔ وزیر علی کی اسکیم نیپال پہونچنا تھی

واحد اور جمع

وزیر وظیفہسلاطینافواجشکایاتجنگل

وظیفے
فوج شکایت جنگلوں

NAI ROSHNI--NCERT SOLUTION CLASS X URDU

نئی روشنی

کلاس میں بچے کس بات پر حیرت زدہ تھے
جواب کلاس کے بچے حیرت زدہ اسلئے تھے کیونکہ انکی کلاس میں ایک نابینا بچا آنے والا تھا

بریل اجاڑ کرنے والے کا نام کیا تھا
بریل کو لوئی بریل نے ایجاد کیا تھا

بریل کے ذریعے پڑھائی کس طرح ہوتی ہے
ایک خاص  سے موٹے کاغذ پر حروف کو اُبھرا جاتا ہے جنہیں تھوڑی تربیت کے بعد انگلیوں سے کو کے پڑھ سکتے ہیں بریل میں چھ نکلتے ہوئے ہے جنہیں کئی طرح سے ملکر حروف اُبھارے جاتی ہیں دنیا کی کوئی بھی زبان اس تحریر میں لکھی یہ پڑھ جا سکتی ہے

لوگ سفید چھٹی کیوں رکھتے ہیں
سفید چھڑی نابینا لوگوں کی پہچان ہے اس چھڑی کو دیکھ کے لوگ اونچے راستہ دے دیتے ہیں اور ضرورت ہونے پر اونچے انکی منزل تک پہنچا دیتے ہیں

نیچے ہوئے لفظوں کو جملوں میں استعمال کیجیے 

موسیقار بسماللہ  خان ایک معروف موسیقار ہے


حیرت زدہ کلاس کے بچے حیرت زدہ تھے

مقدار  

وقفہ 

اخبار نویس

عہدہ رضیہ سلطان نے میر آخر کا ایک حبشی غلام کو سے دیا

آلہ



RAZIA SULTAN -- NCERT SOLUTION CLASS X URDU

رضیہ سلطان

1.رضیہ سلطان کی خوبیاں کیا تھی
رضیہ ذہین مختی اور ہوشیار تھی

2. رکن الدین کس کا بیٹا تھا اسے کیسے مارا
رکن الدین التمش کا بیٹا تھا دلی کے لوگوں نے اسے گرفتار کرکے موت کے گھاٹ اتار دیا

3. التمش کی وصیت کیا تھی
التمش کی وصیت کے حساب سے رضیہ دلی سلطنت کی اگلی سلطان بنے گی 

4. تخت نشینی کے بعد رضیہ نے کیا عہدہ کیا
تخت نشینی کے بعد رضیہ نے عہد کیا کے میں عوام کی بھلائی اور سلطنت کی ترقی کے لیے کام کرونگی میں اس وقت تک چین سے نہیں بیٹھیں گے جب تک میں یہ ثابت نہ کردو کے میں مردوں سے کم نہیں 


5. رضیہ نے میر اخوار کا عہدہ کیسے دیا
رضیہ سلطان نے میر اخور کا عہدہ ایک حبشی غلام یاقوت کو دیا


6. رضیہ کی فوج کا مقابلہ کیسے ہوا تھا
رضیہ کی فوج نے بھٹنڈہ کے گورنر التونیہ کی فوج کا مقابلہ کیا



7. رضیہ سلطان نے کتنے برس حکومت کی
رضیہ سلطان نے ساڑھے تین برس حکومت کی


نیچے لکھے ہوئی لفظوں سے جملے بنائے 

ذہن  آج کل ایسا ماحول ہے کے ذہن کو سکون نہیں ملتا

وفاداری  کتہ اپنی وفاداری کے لیے مشہور ہے

عہدہ  رضیہ سنتن نے میر اخوہ کا عہدہ ایک حبشی غلام کو دیا

محافظ۔ ہم سب کا محا


مزکر اور مونث

بیٹیبہنعالمملکہ
بیٹابھائی عالمہ بادشاہ

PAHAD AUR GILEHRI-- NCERT SOLUTION CLASS X URDU

پہاڑ اور گلہری


پہاڑ نے گلہری سے ڈوب مرنے کو کیوں کہاپہاڑ کے نظریے سے گلہری ایک ذرا سی چیز ہے پھر بھی اسکو بہت غرور ہے

سوال: گلہری نے پہاڑ کو کیا جواب دیا؟
جواب: گلہری نے پہاڑ کی باتیں سن کر پہاڑ کو منھ سبھالنےکہا اور کہا کہ ان کچّی باتوں کو دل سے نکالنے کہا اور اسنے کہا کہ جو میں بڑی نہیں تیری طرح تو کیا ہوا خدا نے کوئی بڑا کوئی چھوٹا اور سب کو الگ کام کے لئے بنایا ہے۔


 سوال: پہاڑ نے اپنی بڑائیمیں کیا کہا؟
جواب: پہاڑ نے اپتی بڑائی کرتے ہوئے گلہری کو نیچا دکھایا اور کہا کہ زمین بھی پست ہے پہاڑ کے آن بان کے آگے۔



 سوال: گلہری ایسا کون سا کون کر سکتی ہے جو پہاڑ کے بس کا نہیں؟
 جواب: گلہری درخت پہ چڑھ سکتی ہے چھالیا توڑ سکتی ہے لیکن پہاڑ یہ سب نہیں 
کر سکتا۔

 سوال: کن باتوں سے خدا کی کدرت کا پتا چلتا ہے
جواب: دنیا کی ہر چیز سے خدا کی حکمت ظاہر ہوتی ہے کوئی بھی چیز بیکار نہیں  دنیا میں خدا کی بنائی ہوئی کوئی بھی چیز بری نہیں

Tuesday, August 13, 2019

Khuda ke nam khat

خدا کے نام خط


1. سوال لین شو نے خدا کے نام خط من کیا لکھا
جواب لین شو نے  خدا کے نام خط میں لکھا یا ربی اگر تونے میری مدد نہیں کی تو میں اور میرا کنبہ اس سال فاقوں کے شکار ہو جائیں گے اس وقت ایک سو روپوں کی شد ضرورت ہے تاکہ میں کھیتوں کی حالت دوبارہ ٹھیک کر سکوں اور ان میں بوائی کے سکوں اور  فصل کی کٹائی تک زندہ بھی رہ سکوں کیونکہ رالا باری نے ساری فصل تباہ کر دی ہے


2.سوال لین شو نے للیں شو نے بی بی سی کیا قیاس آرائی کی
جواب لین شو کا بیبی سے کیا قیاس تھا کی آج بارش ہوگی


3. سوال لائ شو بارش میں کھیتوں کی طرف کیوں گیا
جواب اس کا مقصد تھا کے بارش سے پیدا ہونے والی ترانگ اپنے من تن میں رواں دواں دیکھے


4. ژلا باری سے کیانقصانات ہوئے

ژلا باری سے درختوں پر ایک پتہ نہ رہا غلّے کے کھیتوں کا ستیاناس ہوگیا مٹر کی بیلیں اور پودوں اور کے تازہ پھول تت گئے


5. سوال لفافے پر کیا پتہ لکھا
جواب   لفافے پر پتہ لکھنے کی جگہ اُسنے لکھا یہ خط خدا کو میلے



6. سوال پوسٹ ماسٹر نے لین شو کا خط پڑھنے کے بعد کیا کیا
جواب


7. سوال لین شو نے پہلے خط کا جواب ملنے کے بعد دوسرے خط میں کیا لکھا
جواب دوسرے خط میں لین شو نے لکھا یہ ربی جو رقم میں تالاب کی تھی  اُسنے سے مجھے صرف ستتر روپیے ہے میلے ہیں باقی رقم بھی فوراً ارسال کرے شدید ترین ضرورت ہے  لیکن اب باقی رقم ہرگز نہ ڈاک کے ذریعے بھیجیں کیونکہ اس ڈاک کھانے کے ملازمین نے ایمان اور بد دیانت ہے

لکھے ہوئی لفظوں کو جملوں میں استعمال کیجیے


اکلوتا یوسف اپنے مان باپ کا اکلوتا بچا ہے


ملازمیں  لین شو نے ڈاک خانے کے ملازمین بہت بے ایمان ہے


نیک دلی  اللہ ہمیں ہماری نیک دلی کا پورا اجر  دیتا ہے


پختہ یقین لین شو کو خدا پر  پختہ یقین تھا


تکیا کرنا






ان لفظوں کے متضاد لکھیے

شہر موجودپختہشکست

تیز   نزدیک
گاو غیر موجود باقرارفتح دھیرے دُور


ا

واحد اور جمح

خط افسرسبزیروحچادرمکان


سبزیاں روحیں چادریں مکانوں

Zabano ka ghar hindustan -- NCERT SOLUTION CLASS X URDU

زبانوں کا گھر ہندوستان




1. ہندوستان کی خصوصیات کیا ہے
.جواب ہندوستان میں اونچے پہاڑ گہرائی ندیاں اور ریگستان ہے کہیں سر سبز زمین ہے کہیں بنجر زمین ہے تھا کے لوگ کالے بھی ہے گورے بھی ہے خوب صورت بھی ہے اور بدصورت بھی جنگلوں کی زندگی بسر کرنے والے بھی ہے اور بڑے بدی شھروں میں رہنے والے بھی ہندوستان میں بہت سی زبانیں بھی بولی جاتی ہے

2.ہندوستان کی قبائلی نسلی کے نام کیا ہے
جواب ہندوستان کے قبائلی نسلیں کول اور منڈا ہے

3.دراوڑ کوں سے زبان بولتے ہے
جواب دراوڑ تامل اور تیلگو زبانیں بولتے ہے

4. سنسکرت کس زبان کی شاخ ہے
جواب سنسکرت آریائی زبان کی شاخ ہے

5. اتر بھارت میں کوں سے پراکرت بولی جاتی ہے
جواب اتر بھارت میں شور سینی بولتے ہیں

6. ہند آریائی زبانیں کوں کوں سے ہے
جواب بنگالی مراٹھی آسامی گجراتی پنجابی سندھی  یہ آریائی زبانیں ہے

7. اردو کہا پیدا ہوئی اور کس زبان سے نکلی
 جواب اردو ہندوستان میں پیدا ہوئی اور شورسینی زبان سے نکلی

Qol ka paas



قول کا پاس

سوال : اکبر کس خاندان کا بادشاہ تھا
جواب : اکبر مغل خاندان کا مغل خاندان کا بادشاہ تھا


سوال : راج پوتوں کے اس  سردار کیا نام کیا تھا وہ جنگل میں کیوں چپ گیا تھا
جواب : اکبر نے  لڑائیاں لڑ کر ہندوستان کا بہت سا حصہ فتح کر لیا تھا ایک راجپوتانہ رہا گیا تھا  اکبر نے چاہا کے اسے بھی فتح کرلیے  اور وہاں بھی سلطنت کرے یہ ارادہ کرکے اکبر نے راجپوتانہ پر فوج کشی کی راجپوت اپنا ملک بنانے کے لیے  لڑے تو  بڑی بہادری سے  لیکن آخر کار ان کے پاوں اُکھڑ گئے  راجپوتوں کا  اسلئےایک سردار رانا پرتاپ سنگھ اپنے بال بچوں کے ساتھ جنگل میں کا چھپا


سوال : رگھویت نے پھر دار کی مدد کس طرح کی

جواب :


 شوال : اکبر رگهویت کی کس بات سے متاثر ہوا

جواب : اکبر رگھپت کی بہادری اور ایفائے وعدہ سے متاثر ہوا


سوال : اکبر نے رگھویو ت کا دل کا طرح جیت لیا

جواب اکبر نے رگھو پت کا دل اپنی دریا دلی سے جیت لیا


نیچے لکھے ہوئے لفظوں سے جملہ بنائے



سلطنت : اکبر ایک بہت بڑی سلطنت کا شہنشاہ تھا

فوج :  فوج ملک کی حفاظت کرتی ہے


پہریدار : فوجی ملک کے پہریدار ہیں

تدبر : جنگ تدبر سے جیتی جاتی ہے

قصور : جنگ میں کئی بے قصور لوگوں کی بھی جان جاتی ہے

 نیچے لکھے ہوئے محاوروں کو جملوں میں استعمال کیجیے

پاؤ اکھاڑنا : دشمن فوج کے پاوں اُکھڑ گئے

ڈھارس بندھنا : فوجی مدد پا کر بادشاہ کی ڈھارس بندھی

قول دینا : اس نے مدد کرنے کہا قول دیا

دل بھر آنا : گھر سے دور جاتی ہوئے سلیم کا دل بھر آیا

پھولا نہیں سمانا : جنگ میں فتح سے بادشاہ پھولے نہ سمایا




واحد اور جمع

ممالکاسفارامدادتدابیرافواج
ملک سفر مدد تدبیر  فوج






نیچے لکھے ہوئی لفظوں سے مذکر سے مونث اور مونث سے مذکر بنائے

بیٹیعورتلڑکاگھوڑابادشاہ
بیٹا مردلڑکیگھوڑیملکہ





ان لفطوں کے متظاد الفاظ

محبتدشمنقیدبہادردکھسچائی
نفرت دوست آزادقائلسکھجھوٹ

Hamd - NCERT Solutions Class X Urdu

حمد


1. شاعر نے بیل بوٹوں کو مٹی سے اگایا ہوا کیوں کہا ہے؟
جواب: شاعر نے بیل بوٹیو کو زمین سے اگایا ہوا اسلئے کہا ہے کیونکہ بیل بوٹیں کا بیج مٹی میں گڑا جاتا ہے اسلئے بیل بوٹے مٹی سے اگتے ہے 

2. سورج کو چشمہ کیوں کہا گیا ہے؟
جواب: سورج نکل نے کے بعد سورج کی کیرنیں  چشمہ کی طرح پھیل جاتی ہے

3. چڑیاں خدا کی تسبیح کیسے کرتی ہیں؟
جواب: وہ اپنی چہچہاہٹ میں اللہ کی حمد و ثنا بیان کرتی ہے

4. آخری شعر میں کارخانے سے کیا مراد ہے؟ 
جواب: آخری شعر میں کارخانے سے مراد دنیا ہے

Ncert class 10 urdu (jaan pehchan)

ترتیب

نیکی اور بدی


ہستی اپنی حباب کی سی ہے

لای حیات،آئے،فضلے چلی،چلے

آدمی کی کہانی 

کوئی امید بر کر نظر نہیں آتی

اے شریف انسانو

اونتی

قدم بڑھاؤ دوستوں

bheem rav ambedkar-- NCERT SOLUTION CLASS X URDU

ڈاکٹر  بھیم راؤ امبیڈکر۔         


سوال : ڈاکٹر امبیڈکر کا پورا نام کیا تھا اُن کا تعلق کس خاندان سے تھا
جواب : ڈاکٹر امبیڈکر کا اصل نام بھیم راؤ سکپال تھا اُنکا تعلق مراشترا کے مہار خاندان سے تھا


سوال : بھیم راؤ کے نام میں امبیڈکر کیوں شامل ہوا
جواب : ستارہ کے ایک اسکول میں امبیڈکر نامی استاد تھے  کے ذات پات کی تفریق کو نہیں مانتے تھے وہ سابقے ساتھ برابری کا سلوک کرتے تھے وہ بھیم راؤ کو بہت چاہتے تھے استاد اور شاگرد کا یہ راستہ ایسا مضبوط ہوا کے آگے چل کر بھیم راؤ سكپال سے بھیم راؤ امبیڈکر بن گئے



سوال : چھوت  چھات سے ملک کو کیا نقصان ہوا
جواب : اس کی وجہ سے ملک کا ایک بڑا حصہ غربت اور جہالت کا شکار رہا



سوال : بھیم راؤ امبیڈکر کا سبز اہم کارنامہ کیا تھا
جواب : جب ہمارا ملک آزاد ہوا تو اسکا دستور بنانے کی ذمےداری ڈاکٹر امبیڈکر کو سونپی گئی

Friday, March 8, 2019

عالمی یوم خواتین پر خصوصی مضمون

اسلامی معاشرے میں خواتین کا مقام

( یہ مضمون 8 مارچ 2014 کو شائع ہوا تھا مضمون کی
 افادیت دیکھتے ہوئے اسے از سر نو پیش کیا جارہا ہے۔)

آج یوم خواتین ہے۔دنیا بھر میں خواتین اپنی شناخت کی بقا کے لئے منصوبے بنا رہی ہیں۔معاشرے میں اپنی حیثیت کو تسلیم کرانے کے لئے جد وجہد کے راستے تلاش کر رہی ہیں اور اس اندھی دوڑ میں اسلام کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔حالانکہ وہ سب اس حقیقت سے لاعلم ہیں کہ خواتین کے حقوق کو تسلیم کرنے اور انہیں ایک انقلابی حیثیت دینے میں اسلام سب مذاہب سے آگے ہے۔

کیا اسلامی معاشرے میں خواتین  کے ملازمت اختیار کرنے کو آج بھی معیوب سمجھا جاتا ہے؟ اعلیٰ تعلیم حاصل کرنے کے بعد بھی لڑکیوں سے یہ توقع کی جاتی ہے  کہ وہ شادی کے بعد اپنے گھر کی چہاردیواری تک محدود رہیں۔ لڑ کیوں کو ملازمت کے’’ قبیح فعل‘‘ سے بعض رکھنے کے لئے اسلامی احکامات کا حوالہ بھی دیا جاتا ہے۔

بے شک اسلام نے شرم و حیا کو عورتوں کا زیور بتایا ہےاور اسے پردے میں رہنے کی تلقین کی ہے،لیکن یہ بات بھی اپنی جگہ درست ہے کہ اسلام نے شرعی حدود میں خواتین کے کام کرنے کو کبھی غلط نہیں سمجھا۔اس حقیقت سے کوئی انکار نہیں کر سکتا کہ اسلام نے عورتوں کو دیگر مذاہب کے مقابلے کہیں زیادہ آزادی دی ہےاور پوری طرح ان کے حقوق کی حفاظت کی ہےخواتین کو اپنی فلاح و بہبود کے لئے کسی دوسرے کی جانب دیکھنے کی قطعی ضرورت نہیں۔اسلام نے ان کو وہ تمام آزادی فراہم کی ہے جن سے وہ جائز طریقے پر اپنی ضروریات کی تکمیل کرسکتی ہیں۔ہندوستانی معاشرے میں عورتوں سے جو ناروا سلوک کیا جاتا ہے اس کا اسلامی تعلیمات سے کوئی واسطہ نہیں بلکہ یہ اس تہذیب کی دین ہے جس کی بنیاد مردوں کے آمرانہ مزاج پر رکھی گئی ہے۔غور طلب بات یہ ہے کہ آحر وہ کون سے عوامل ہیں جنہوں نے صنف نازک کو اپنی تہذیب و تمدن سے بغاوت پر آمادہ کیا۔ وہ کیا وجوہات ہیں جنہیں انہوں نے ان طاقتوں کا آلہ کار بنادیا جو ہمارے تہذیب و تمدن اور اسلامی شناخت کو ملیا میٹ کردینا چاہتی ہیں۔ اگر ہم نے فوری طور پر اپنا محاسبہ نہ کیا اور اس کے سد باب  کی کوشش نہ کی گئی تو حالات مزید نازک ہوتے چلے جائیں گے۔

آج ہندوستانی معاشرے میں مسلم خواتین اپنی ہم وطنوں کی طرح ملازمتیں اختیار کر رہی ہیں۔انہیں اس معاملہ میں یکلحت یہ کہ کر روکا نہیں جاسکتا کہ اسلام انہیں اس کی اجازت نہیں دیتا۔اسلام نے عورتوں و مردوں سب کو مساویانہ حقوق دیے ہیں ساتھ ہی اس نے سبھی معاملے میں ایک حد مقرر کی ہے، اصول و ضوابط مقرر کیے ہیں۔ کوئی بھی شخص خواہ وہ مر د ہو یا عورت اپنی حد سے تجاوز نہیں کر سکتا۔اسلام دین فطرت ہے اور اس نے تمام فطری تقاضوں کوملحوظ خاطر رکھا ہے۔اب اس صورت میں اپنی جانب سے سخت رویہ اپنایا جائے گاتو ظاہر ہے اس کے رد عمل میں وہ نتائج ظہور پذیر ہوں گے جو معاشرے کے لئے خطر ناک ہیں لیکن انسانی ضرورتوں اور فطری تقاضوں کو مد نظر رکھتے ہوئے اسلامی تعلیمات کی روشنی میں ایک درمیانی راستہ اختیار کیا جائے تو تمام مسئلوں سے بہ آسانی نمٹا جا سکتا ہے۔

بے جا رکاوٹوں اور حد سے زیادہ پابندیوں کی وجہ سے عورتوں میں یہ غلط فہمی پائی جاتی ہے کہ مرد اپنی قوامیت ثابت کرنے کے لئے ان کو دبا کر رکھنا چاہتے ہیں ۔ وہ یہ سمجھتی ہیں کہ اسلام نے انہیں جو اختیارات دیے ہیں انہیں اس سے محروم رکھا جاتا ہے اور اسلام  کے نام پر ان کا استحصال کیا جاتا ہے۔ممعاشرے کےعملی شواہد بھی ان کے اس الزام کی تائید کرتے ہیں۔ہندوستانی معاشرے میں خواتین کے ساتھ پردے اور گھریلو ذمہ داریوں کے کے نام پر جو ناروا سلوک عام رکھا گیا اس کی مثال مہیں ملتی۔بے بسی اور کم مائیگی کے احساس نے ان کے اندر  بغاوت پیدا کردی ہے اور اپنی جائز ضرورتوں اور مطالبوں کے حصول کے لئے انہوں نے غلط راستہ اختیار کرلیا ہے۔معاشرے میں عورتوں میں جو یہ آزادی پائی جاتی ہے اس کے لئے بہت حد تک مرد ذمہ دار ہیں۔اگر اسلامی تعلیمات کی روشنی میں معاشرے میں بیداری پیدا کی جاتی اور عورتوں کے حقوق سلب نہ کئے جاتے تو آج یہ صورت حال پیدا نہ ہوتی۔

اسلام مرد و عورت کی جداگانہ اور منفرد حیثیت کو تسلیم تو کرتا ہے لیکن اس کے نزدیک ان دونوں کے درمیان کسی مادی کشاکش یا مفاداتی تصادم کا کوئی  وجود نہیں۔اسلام میں مرد اور عورت دونوں کو یکساں حقوق حاصل ہیں بلکہ بعض معاملوں میں عورتوں کو مردوں پر سبقت حاصل ہے۔
                        

Sunday, February 24, 2019

NCERT Urdu Solutions for Class 6, 7 and 8

 این سی ای آر ٹی اردو کی درسی کتابات کے حل









پیارے بچّوں!

 اردو ایک بہت پیاری اور آسان زبان ہے۔ تم ایک بار اس زبان میں مہارت حاصل کرلو تو یہ خود بہ خود تم کو اپنا گرویدہ بنالے گی۔ یعنی تم اس زبان کے بنا رہ نہیں پاؤگے۔ انٹرنیٹ کے زمانے میں اس کا پڑھنا اور سمجھنا اور بھی آسان ہو گیا ہے۔ اسکول میں اگر یہ زبان تمہیں مشکل لگتی ہے تو پریشان ہونے کی ضرورت نہیں۔ ہم نے اس کا حل ڈھونڈھ لیا ہے۔ انٹرنیٹ پر جہاں دسرے سبجیکٹ کے حل موجود ہیں۔ ہم نے بھی این سی ای آر ٹی کی مختلف درجات کی اردو کتابوں کے سوال نامے کا حل یہاں پیش کیا ہے۔ یہ صرف آپ کی سہولت کے لیے ہے آپ اس پر مکمل انحصار نہ کریں بلکہ اس سے سیکھیں اور اپنے جوابات خود لکھیں۔

 ہم چاہتے ہیں کہ آپ کو جہاں بھی کچھ دشوار لگے ہم سے پوچھیں۔
اردو لکھنے پڑھنے اور سیکھنے میں جو بھی مدد آپ کوچاہیے ہم اس کے لیے تیار ہیں۔

ممکن ہے آپ کی کتاب اس سے الگ ہو۔ پریشان نہ ہوں آپ صرف اپنے سوال ہمیں بھیجیں۔اور اس کا جواب پائیں۔

 ہر سبق کے نیچے تبصرے کی جگہ موجود ہے وہاں آپ  اپنے سوالات لکھیں۔ پہلی فرصت میں اس کا جواب دیا جائے گا۔ اگر آپ واٹس اپ پر ہم سے اپنے سوالوں کا جواب چاہتے ہیں تو ہمارا نمبر ہے 9599547069

ہمارا مقصد آپ کو اردو سکھانا ہے۔ مفت ، بالکل مفت

 اردو لکھنے، پڑھنے اور سیکھنے میں آپ کے تعاون کے لیے ہمیشہ تیار۔


 آئینہ

خوش خبری